تین سال کیلئے 1100 ارب روپے کا کراچی پیکج ناکافی ہے،سراج تیلی

156

کراچی (اسٹاف رپورٹر)بزنس مین گروپ (بی ایم جی) کے چیئرمین اور سابق صدر کے سی سی آئی سراج قاسم تیلی نے ملک کو درپیش مختلف بحرانوں کا ذمہ دار تمام سیاستدانوں کو قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ واقعی بدقسمتی ہے کہ اچھے تعلیم یافتہ اور قابل افراد انتخابات میں حصہ نہیں لیتے اور نہ ہی کوئی دلچسپی لیتے ہیں جس کی وجہ سے منصب پر نااہل فراد مسلط ہوجاتے ہیں جو ملک کو درپیش بحرانوںکی بنیادی وجہ ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری ( کے سی سی آئی ) کے 59 ویں سالانہ اجلاس عام سے خطاب میں کیا۔ اجلاس میں وائس چیئرمینز بی ایم جی طاہر خالق ، زبیر موتی والا، انجم نثار ( بذریعہ زوم) ، جنرل سیکرٹری اے کیو خلیل، نومنتخب صدر شارق وہرہ، نومنتخب نائب صدر ثاقب گڈ لک، نومنتخب نائب صدر شمس السلام، سبکدوش صدر آغا شہاب احمد خان، سبکدوش سینئر نائب صدر اشد اسلام، سبکدوش نائب صدر شاہد اسماعیل، مینیجنگ کمیٹی کے ارکان اور جنرل باڈی ممبران کی بڑی تعداد شریک تھی۔سراج تیلی نے کراچی کے ساتھ ہمیشہ سوتیلی ماں جیسا سلوک کرنے پر تمام حکومتوں پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ہم کراچی کے حقوق کے لیے مستقل اپنی آواز اٹھاتے رہے ہیں اور انفرااسٹرکچر کے سنگین مسئلے کو اجاگر کرتے چلے آرہے ہیںجو پہلے ہی خراب حالت میں تھا اور حالیہ موسلادھار بارشوں کے بعد انفرااسٹرکچر بالکل تباہ ہوگیا ہے۔اگرچہ حکومت نے 1100 ارب روپے کے کراچی پیکیج کا اعلان کیا ہے لیکن کراچی کی تیزی سے بڑھتی آبادی اور مسائل کو سامنے رکھتے ہوئے کراچی کے لیے اعلان کردہ گیارہ سو ارب روپے کا کراچی پیکیج ناکافی ہے۔حکومت کو اگلے 3 سالوں کے لیے گیارہ ہزار ارب روپے دینے کا اعلان کرنا چاہیے جو اگر دیا گیا تو یقیناً انفرااسٹرکچر کی صورتحال بہتر ہوگی۔