لیبر عدالت میں جج مقرر کیا جائے

110

عام لوگ اتحاد کے رہنما مسعود حیدر نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ لیبر کورٹ حیدرآباد میں 3سال سے جج مقر ر نہ ہونے کے سبب کیس رکے ہوئے ہیں جس سے غریب مزدورں میں شدید بے چینی اور مایوسی پھیلتی جارہی ہے اگر محنت کشوں کو انصاف ہی نہ ملے تو وہ اپنے جائز مسائل کہا لے کر جائیں تو دوسر ی طرف اداروں پر مسلط مزدور دشمن افسران بالا کے مزدورں کے کیس حل نہ ہونے کے سبب حوصلے بلند ہورہے ہیں اور وہ مزدوروں کے جائز حقوق غضب کر نے کے ساتھ ساتھ ان کا معاشی قتل عام کر رہے ہیں۔ مہران شوگر ملز ٹنڈوالہیار کے درجنوں کیس لیبر کورٹ حیدرآباد میں زیر سماعت ہیں مگر جج نہ ہونے کے سبب انھیں انصاف نہیں مل رہا یہ غریب مزدور انصاف کے منتظر ہیں۔ ہم چیف جسٹس پاکستان، وزیر اعظم پاکستان سے درد مندانہ اپیل کرتے ہیں کہ لیبر کورٹ میں فوری طور پرایمان دار جج مقر ر کیے جائیں۔