نکلو……………اجمل سراج

72

یہ موقع ہے نکلو تم اپنے گھروں سے
کہ نکلو گے پھر کس طرح مقبروں سے

یہ سیل ستم جو بڑھے جا رہا ہے
گزرنے کو ہے اب تمہارے سروں سے