پی سی بی ،پی ایس ایل فرنچائز تنازع عدالت نے فریقین کو طلب کرلیا

108

لاہور(آئی این پی )لاہور ہائیکورٹ نے پاکستان سپر لیگ کے فرنچائرز کی درخواست پر پاکستان کرکٹ بورڈ سمیت دیگر فریقین سے 30 ستمبر کو جواب طلب کرلیا۔ عدالت نے تاحکم ثانی فرنچائرز مالکان کے خلاف تادیبی کارروائی روکنے کا حکم بھی دے دیا۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے پی ایس ایل فرنچائرز کی درخواست پر سماعت کی جس میں پی ایس ایل کیلئے مالی ڈھانچے کی تشکیل کو چیلنج کیا گیاہے۔ بورڈ کے وکیل تفضل رضوی نے درخواست کے قابل سماعت ہونے پر اعتراض کیا،انہوںنے نشاندہی کی کہ درخواست گزار مالکان عدالت کی بجائے کرکٹ بورڈ حکام سے بات کریں۔ درخواست میں خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ پی سی بی کے اس اقدام سے فرنچائرزکو مالی نقصان ہو گا، پی سی بی پی ایس ایل کا ناصرف آرگنائزر ہے بلکہ برابری کی بنیاد پر شفاف طریقہ سے کام کرنے کا پابند ہے، پی سی بی کے یکطرفہ فیصلوں سے پی ایس ایل کا چھٹا سیزن کینسل ہو سکتا ہے ۔درخواست گزارفرنچائرز مالکان نے خدشہ ظاہر کیا کہ پی سی بی کا یہ اقدام کرکٹ کے فروغ اور عوام کی تفریح میں رکاوٹ بن سکتا ہے،لہذا عدالت سے استدعا ہے کہ پی ایس ایل فرنچائرز کا موقف سن کر ان کے تحفظات دور کیے جائیں اور پی سی بی کو حکم دیا جائے کہ پی ایس ایل کے مالی ڈھانچے پر نظر ثانی کرے۔