محکمہ ماہی گیر کے اہلکار کا قتل، شمالی اور جنوبی کوریا میں کشیدگی بڑھ گئی

206

سؤل: جنوبی کورین فوج نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ شمالی کورین فوج نے ان کے ایک محکمہ ماہی گیر کے اہلکار کو قتل کر کے اس کی لاش کو جلا ڈالا ہے۔

غیر ملکی ذرائع ابلاغ کے مطابق جنوبی کوریا نے اپنے بیان میں تصدیق کی ہے کہ ان کا ایک ماہی گیر اہلکار شمالی کورین فوج کے ہاتھوں قتل کیا گیا ہے۔

جنوبی کوریا نے شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے شمالی کوریا سے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی اور انہیں سخت سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

جنوبی کورین فوج کا کہنا ہے کہ ماہی گیر اہلکار شمالی کورین فوج کی جانب سے سرحد عبور کرنے کی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے ہلاک ہوا۔ شمالی کورین فوج نے اہلکار کو فائرنگ کر کے قتل کیا اور پھر لاش کو جلا ڈالا۔

جنوبی کوریا کی وزارت دفاع نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ہماری ملیٹری انٹیلی جنس کے مطابق شمالی کورین فوج نے اہلکار کو زندہ پکڑا، اسے تشدد کا نشانہ بنایا اور گولی مار کر اس کی لاش کو جلا دیا۔

وزارت دفاع نے کہا کہ “ہماری فوج اس قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہے۔ ہم شمالی کوریا سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ماہی گیر اہلکار کے قتل کی وضاحت دی جائے اور ذمہ داران کو سخت سزا دی جائے۔

وزارت دفاع نے کہا کہ “ہم شمالی کوریا کو خبردار کرتے ہیں کہ اس قتل کی ذمہ داری ان پر عائد ہوتی ہے”۔

جنوبی کوریا کا ماہی گیر اہلکار گزشتہ پیر کو شمالی لمٹ لائن (این ایل ایل) سے 6 میل کی دوری پر کشتی پر گشت کرتے ہوئے لاپتہ ہوگیا تھا۔ اب تک یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ 47 سالہ اہلکار وہاں کیا کر رہا تھا اور کیسے شمالی کوریا کی فوج کے ہاتھ آیا۔