حیدرآباد ،بجلی بحران نے عوام کی زندگی عذاب بنا دی،کاروباری نظام ٹھپ

36

حیدرآباد(اسٹاف رپورٹر) شدید گرمی میں حیسکو کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے شہریوں کی زندگی عذاب بنادی‘ دس سے بارہ گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ معمول بن چکی ہے جبکہ غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اس کے علاوہ ہے جس سے نہ صرف شہر کا کاروبار بلکہ پورا نظام زندگی ہی متاثر ہوکر رہ گیا جبکہ شہر کے کئی علاقوں میں ٹرانسفارمر نہ ہونے کے باعث کئی کئی روز سے بجلی کی فراہمی بند ہے اورکوئی پوچھنے والا نہیں ہے شہر کے منتخب نمائندے‘ ضلعی انتظامیہ سب خواب خرگوش میں ہیں بجلی کی مسلسل بندش کے باعث پانی کی فراہمی بھی متاثر ہورہی ہے اور بیشتر علاقوں میں جب پانی آنے کا وقت
ہوتا تو بجلی نہیں ہوتی جس کے باعث پانی کی قلت پیدا ہوگئی ہے اور لوگ دور دراز کے علاقوں یا پھر ٹینکرز کے ذریعے پانی منگوانے پر مجبور ہیں ۔شہریوں نے وفاقی وزیر پانی وبجلی سمیت دیگر حکام سے مطالبہ کیا کہ حیسکو کا قبلہ درست کیا جائے اور عوام کو بجلی کی مسلسل فراہمی کے ساتھ اضافی بلوں سے نجات دلائی جائے ۔