23ستمبر تاریخ کاسیاہ دن اور یوم قتل انصاف ہے: ڈاکٹر فوزیہ صدیقی

200

کراچی(اسٹاف رپورٹر) قوم کی بیٹی ڈاکٹر عافیہ کی ہمشیرہ اور عافیہ موومنٹ کی رہنما ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے کہا ہے کہ23ستمبر 2010 یوم قتل انصاف اورتاریخ کا وہ سیاہ دن ہے جب امریکہ نے انصاف کی دھجیاں بکھیر دیں اور پاکستان کی بیٹی عافیہ کوبغیر کسی ثبوت و شواہدکے چھیاسی سال کی سزا دے دی۔

اس دن انسانیت کے ضمیر کا مقدمہ شروع ہوا جس میں انسانیت ہار رہی ہے۔ یہ وہ سیاہ دن ہے جب پاکستانی حکمرانوں نے اپنی غیرت کا سودا کیا اور مجرمانہ خاموشی قائم رکھی۔اور اب دس سا ل کے بعد بھی خاموش ہیں۔ عافیہ جس جیل میں ہے آج وہ امریکہ کی بد ترین جیل کی حیثیت اختیار کر گئی ہے۔

پاکستانی قوم کی بیٹی روزانسانیت سوز مظالم سہہ رہی ہے۔ وزیر اعظم عمران خان سے آج اس پر امن انسانی حقوق مارچ کے توسط سے پوری قوم اپیل کر رہی ہے کہ اس بار اقوام متحدہ کی کی جنرل اسمبلی اور امریکی صدر سے ہونے والی میتنگ میں اپنی قوم کی بیٹی عافیہ کے لئے آواز اٹھائیں اور ایک غیرت مند لیڈر کی طرح اسے وطن واپس لائیں۔

مصلحت کی خاطر بیٹیوں کی ناموس پر سودا نہیں کیا جاتا۔ وہ پاکستان سول سوسائٹی کے تحت 23ستمبر کے حوالے سے کراچی پریس کلب تا گورنر ہاؤس ہونے والی عافیہ حقوق پْرامن مارچ کے شرکاء سے خطاب کر رہی تھیں۔

مارچ کے شرکاء میں تحریک لبیک پاکستان کراچی کے امیر علامہ رضی حسینی، پاسبان ڈیموکریٹک پارٹی کے چیئرمین الطاف شکور، پاسبان کراچی کے صدر عبدالحاکم قائد اور جنرل سیکریٹری سردار ذوالفقار،پاکستان سرزمین پارٹی کے رہنما شمشاد صدیقی، سابق ایم پی اے نائلہ منیر، سابق ایم این اے فوزیہ حمید اور فوزیہ طیب۔

پاکستان کنزرویٹو پارٹی کے رہنما کمال احمد، ہومین رائٹس کونسل آف پاکستان کے چیئرمین جمشید حسین، شہری تنظیم پاکستان صدر رضوان شمس، ہم ہیں شاہین فاؤنڈیشن کے چیئرمین عمادالدین،مسلم اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن سندھ کے ناظم دانش کمال، کراچی کے ناظم عادل انصاری، جوائننگ ہینڈز کی چیئرپرسن سبین میمن۔

محبان کراچی سوشل تنظیم کے صدر حافظ محمد ارشد، پاکستان کنزرویٹیو پارٹی کراچی کے صدر کمال احمد، سوشل اسٹوڈنٹس فورم، لاء اینڈ جرنلسٹ گروپ، ابوہریرہ ویلفیئر ٹرسٹ، متحدہ علماء، محاذ، علماء، کونسل آف کراچی،عالمی حمدو نعت کونسل، غریب اتحاد پارٹی، اومیپ ریسرچرز، معاخس اکیڈمک پارک سرجانی ٹاؤن، الرحمان اکیڈمی م سرجانی، آکسفورڈ گرامر اسکول سرجانی، پرنس گرامر اسکول نارتھ کراچی شریک تھے۔

ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے کہا کہ قیدی خاتون اسٹیو ایلیوٹ کا حالیہ بیان کہ میں عافیہ کے ساتھ قید تھی وہ انتہائی پیاری، نرم خو و نرم دل اوربے انتہا ذہین خاتون ہے۔ میری آنکھوں کے سامنے عافیہ کے ذہن کو ماؤف کرنے کے لئے آلات اور بھیانک شوکس دیئے جاتے تھے۔

اس پر بے انتہا مظالم ڈھائے جاتے تھے کہ اپناایمان چھوڑ دے اور بہت کچھ۔ اْس قیدی خاتون کا یہ بیان انسان کے پورے وجود کو لرزا دیتا ہے مگر وزیر اعظم عمران خان خاموش رہے۔ پی ٹی آئی، انصاف کی تحریک اس عظیم نا انصافی پر خاموش رہی اور آج بھی خاموش ہے۔