مسئلہ کشمیر:ہر ظلم کا بدلہ پائو گے

68

منزہ سحر
کاہے یوں مسکاتے ہو
کیوں اتنا اتراتے ہو
یہ ظلم جو سب پے ڈھاتے ہو
اک دن تو ایسا آئے گا
ہر ظلم کا بدلہ پاؤ گے
……
ان خون سے لتھڑی لاشوں کا
سب زخم گزیدہ جسموں کا
کچلی ہوئی زندہ روحوں کا
اک دن تو ایسا آئے گا
ہر ظلم کا بدلہ پاؤ گے
ان جلتے ہوئے گلزاروں کا
سب اجڑے ہوئے بازاروں کا
آنکھوں سے بہتے اشکوں کا
اک دن تو ایسا آئے گا
ہر ظلم کا بدلہ پاؤ گے
……
ان خوفزدہ سے بچوں کا
معصوم صفت ان لوگوں کا
اک دن تو خون پکارے گا
اس دن تم بدلہ پاؤ گے
ہر ظلم کا بدلہ پاؤ گے