ڈکیتی کی بڑھتی وارداتوں کے خلاف احتجاج، تحفظ فراہم کرنے کا مطالبہ

277

کراچی (رپورٹ: علی فاروق سدوزئی )شادمان ٹاؤن اورنصرت بھٹو کالونی کے رہائشیوں اور تاجروں نے چوری ڈکیتی کے وارداتوں میں اضافے کے خلاف احتجاج کیا۔

احتجاجی مظاہرہ کے شرکاء نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے، جن پر مندرجہ ذیل نعرے درج تھے ،شہریوں کو تحفظ دو،منشیات اور چور ڈکیتوں کے خلاف آپریشن کر کے تحفظ فراہم کیا جائے۔

خیال رہے کہ کچھ دن قبل قلندریہ چوک پر قائم موٹرسائیکل کے شوروم میں ڈکیتی کا واقعہ رونما ہوا تھا، جس میں لاکھوں روپے نقد اور کئی موبائل فون چھین کر ڈکیت فرار ہوگئے تھے،سی سی ٹی وی فوٹیج پولیس افسران کے حوالے کردی گئی تھیں،تاہم اب تک ملزم گرفتار نہیں ہوسکے۔

جبکہ دوسری جانب شہر قائد میں ایک بار پھر اسٹریٹ کرائمز کی وارداتوں میں اضافہ ہوگیا، شہری دن دہاڑے لٹنے لگے، ناظم آباد اور ابوالحسن اصفہانی روڈ میں ہونے والی وارداتوں کی فوٹیج منظرعام پر آگئی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں ڈکیتی کی وارداتیں بڑھنے لگیں اسٹریٹ کرائم پھر زور پکڑنے لگے، شہری اپنے گھروں کے باہر بھی محفوظ نہیں، ناظم آباد میں 2موٹرسائیکل سوار مسلح افراد نے خواتین کو لوٹ لیا اور فرار ہو گئے۔

اس حوالے سے پولیس نے بتایاکہ ناظم آباد نمبر دو میں مسلح موٹر سائیکل ملزمان نے خواتین سے بیگ چھین لیا، خواتین نے مزاحمت کی کوشش کی تو ساتھ موجود بچے پر جھپٹ پڑے، خواتین کے شور مچانے پرایک ملزم موٹر سائیکل کی طرف بھاگا، دوبارہ پلٹا اورخواتین کا بیگ لیکر چلتا بنا۔

دوسری واردات میں ابو الحسن اصفہانی روڈ پر مسلح ملزمان نے حجام کی دکان میں لوٹ مار کی، دو مسلح افراد نے دکان میں موجود دو افراد کو زمین پر بٹھایا اور باآسانی لاکرز سے پیسے اور موبائل فونز لے کر فرار ہوگئے،علاوہ ازیں کراچی کے علاقے اسٹیل ٹاﺅن کی پولیس نے ضلع ملیر کے مختلف علاقوں میں ڈکیتیوں میں ملوث گروہ کوگرفتار کرلیاہے۔

پولیس نے انٹیلی جنس اطلاعات پر کارروائی کی۔گرفتار گروہ کا سرغنہ خدا بخش بلوچستان کے علاقے اوستہ محمد کا رہائشی ہے، گرفتار ملزمان نے گزشتہ روز گلشن حدید میں دودھ کی دکان میں ڈکیتی کی واردات کی تھی، واردات میں دکان سے لوٹے گئے موبائل فونز ملزمان سے برآمد کر لئے گئے ہیں۔