موٹروے زیادتی کیس کے مرکزی ملزم عابد علی کے 7 خاکے تیار

67

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک ) موٹروے زیادتی کیس کے مرکزی ملزم عابد علی کے 7 خاکے تیار کرلیے گئے۔ پولیس ذرائع کے مطابق تیار کیے گئے خاکے تفتیشی ٹیموں کے حوالے کردیے گئے ہیں اور بتایا گیا ہے کہ موٹروے زیادتی کیس کا مرکزی ملزم عابد علی مختلف روپ دھارسکتا ہے۔گرفتاری سے بچنے کیلیے ملزم داڑھی ، مونچھ ، کلین شیو یا دیگر میں سے کسی بھی قسم کے روپ میں ہوسکتا ہے۔واضح رہے کہ موٹر وے زیادتی کیس کے مرکزی ملزم کی سالی کشور بی بی نے بتایا تھا کہ عابد علی نے اپنا حلیہ مکمل طور پر تبدیل کر لیا ہے۔ملاقات کیلیے آیا تو پولیس کو اطلاع دے دی تھی لیکن وہ پولیس پہنچتے ہی فرار ہوگیا۔ علاوہ ازیںسانحہ گجر پورہ کے مرکزی ملزم کے سسرال نے ملزم سے لاتعلقی کا اعلان کر دیا۔ ملزم کی ساس نے دیے گئے بیان میں کہا ہے کہ 6 سال قبل بیٹی بشریٰ نے بھاگ کر عابد علی سے شادی کی تھی، ہمارا اس شخص سے اب کوئی تعلق نہیں ہے۔ تفصیلات کے مطابق سانحہ گجر پورہ کی تفتیش کے دوران مرکزی ملزم کی ساس کی جانب سے بیان ریکارڈ کروایا گیا ہے۔ملزم عابد علی کی ساس کا کہنا ہے کہ اس کے خاندان نے ملزم سے تعلق ختم کر دیا ہے۔ جبکہ اس کی بیٹی بشریٰ نے بھی خاندان کی مرضی کیخلاف گھر سے بھاگ کر ملزم عابد علی سے شادی کی تھی۔ 6 سال قبل بشریٰ گھر سے بھاگ گئی تھی اور عابد علی سے خفیہ شادی کر لی تھی۔ بشریٰ کی ماں نے کہا ہے کہ اس کے خاندان نے ملزم سے تمام تعلقات ختم کر دیے ہیں۔واضح رہے کہ دو روز قبل ملزم عابد علی کی اہلیہ بشریٰ کو مانگا منڈی کے علاقے سے گرفتار کیا گیا تھا۔گرفتاری کے بعد عابد علی کی اہلیہ کے حوالے سے کچھ انکشافات سامنے آئے تھے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق گرفتار خاتون بشریٰ نے ملزم عابد علی سے دوسری شادی کی تھی۔ خاتون نے اپنے پہلے شوہر سے علیحدگی کے بعد عابد علی سے شادی کی جس سے ان کی ایک بیٹی ہے۔ پہلے شوہر سے خاتون کے 4 بچے بھی ہیں۔ خاتون کا تعلق فیصل آباد سے ہے۔