ریسٹورنٹس مالکان کا فوڈ پانڈا کا بائیکاٹ جاری

269

آل پاکستان ریسٹورنٹ ایسوسی ایشن (اپرا) کا فوڈ ڈیلیوری کمپنی فوڈ پانڈا کی من مانیوں کے خلاف دوسرے روز بھی احتجاج جاری ہے۔

تمام ریسٹورنٹس مالکان نے واضح طور پر کہا ہے کہ اگر من مانیوں اور بلیک میلنگ کا سلسلہ نہ روکا گیا تو کراچی کے بعد دوسرے مرحلے میں ملک بھر میں فوڈ پانڈا کا بائیکاٹ کیا جائے گا۔

اپرا کے چیئرمین نعیم صدیقی نے فوڈ پانڈا کی اجارہ داری کے خاتمے کے لیے مسابقتی کمیشن آف پاکستان(سی سی پی)سے بھی رجوع کیا ہے جس میں انہوں نے درخواست کی ہے کہ مسابقتی کمیشن اپرا کی شکایت کانوٹس لیتے ہوئے کسی ایک مخصوص کمپنی کی اجارہ داری کا خاتمہ یقینی بنائے اور آزادانہ کاروبار کرنے کے مساوی بنیادوں پر مواقع فراہم کرنے میں اپنا کردار ادا کرے۔

ڈائریکٹر جنرل پالیسی (سی سی پی) کو ارسال کیے گئے خط میں نشاندہی کی کہ فوڈ پانڈا معاہدہ کرتے وقت ریسٹورنٹس کو وینڈر ڈیلیوری سے منع کرتا ہے اور اجارہ داری قائم کرتے ہوئے مجبور کیا جاتا ہے کہ فوڈ پانڈا کی ڈیلیوری سروسز لینے والے ریسٹورنٹس کسی اور ڈیلیوری کمپنی کی خدمات حاصل نہ کریں جو کہ مسابقتی کمیشن آف پاکستان کے وضع کردہ قوانین کی سراسر خلاف ورزی ہے۔

نسیم صدیقی نے خط میں مزید کہاکہ فوڈ پانڈا کی اجارہ داری کی وجہ سے نئی کمپنیوں کی بقا خطرے میں پڑ گئی ہے کیونکہ فوڈ پانڈا ایسے ریسٹورنٹس کو اپنی خدمات کی فراہمی بند کردیتا ہے جو کسی اور ڈیلیوری کمپنی کی خدمات حاصل کرتے ہیں لہٰذا ہماری درخواست ہے کہ فوڈ پانڈا کو اس قسم کے معاہدے کرنے کے لیے ریسٹورنٹس کو مجبور کرنے سے روکا جائے اور آزاد کاروباری مواقع فراہم کرنے کے اقدامات کیے جائیں تاکہ مسابقت کی فضا قائم ہو اور صارفین کو اپنی پسند کی اور معیاری خدمات مسیر آسکیں۔