این ایچ اے کے 2 ارکان کرپٹ مافیا کی پشت پناہی پر معطل

98

اسلام آباد(آن لائن) نیشنل ہائی ویز اتھارٹی کے 2 ارکان کو کرپٹ مافیا کی پشت پناہی کرنے پر ملازمت سے معطل کردیا گیا، رکن ایڈمن کو جھوٹ بولنے اورکرپٹ افراد کو بچانے پر معطل کرکے ان سے وضاحت طلب کرلی گئی ہے جبکہ رکن ای سی کو اربوں روپے کے منصوبوں کی معلومات چھپانے پر معطل کیا گیاا ور ان کے خلاف سخت کارروائی کی ہدایت کی گئی ہے۔ اس حوالے سے 10 ستمبر کو ڈی اے سی کا اجلاس ہوا جس میں این ایچ اے ارکان کی عدم شرکت پر سیکرٹری مواصلات نے ناراضگی ظاہر کی ہے اور ان تمام ارکان سے وضاحت طلب کی گئی ہے اور بعض ارکان کو معطل کرنے کی بھی سفارش کی گئی ہے، جن ارکان کو معطل کیا گیا ہے وہ تمام مراد سعید کے چہیتے افسران ہیں اور دن رات مراد سعید کو خوش کرنے میں لگے رہتے ہیں، اب سیکرٹری مواصلات اور وزیر مواصلات کے مابین سخت جنگ کا امکان ہے کیونکہ سیکرٹری مواصلات کرپشن میں ملوث اور کرپٹ لوگوں کی پشت پناہی کرنے والے ارکان کو نکالنا چاہتے ہیں جبکہ مراد سعید ان ارکان کو تحفظ دینے کی کوشش کریں گے اس حوالے سے ترجمان این ایچ اے کوئی بھی تبصرہ کرنے سے گریز کر رہے۔ ذرائع کے مطابق این ایچ اے حکومت کا کرپٹ ترین ادارہ ہے جہاں روزانہ اربوں روپے کی کرپشن ہوتی ہے، پی اے سی اس کرپشن کی تحقیقات کرنے میں مصروف ہے۔ پی اے سی نے ہدایت کی تھی کہ این ایچ اے میں لمبے عرصے تک ایک ہی سیٹ پر براجمان کرپٹ افسران کو ٹرانسفر کرکے دیانتدار افسران تعینات کیے جائیں لیکن رکن ایڈمن نے پارلیمنٹیرین کے احکامات ہوا میں اڑا دیے اور کسی کرپٹ افسر کو تبدیل نہیں کیا، اس میں ڈائریکٹر پرنسل بھی شامل ہیں۔