حکومتیں محلوں کے اندر نہیں ہوتیں، عوام کی مشکلات کا حل نکالتی ہیں، عارف علوی

85

میر پور خاص (خبر ایجنسیاں) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ حکومتیں محلوں کے اندر نہیں ہوتیں بلکہ حکومتیں عوام کے ساتھ بات کرتی ہیں اور عوام کی مشکلات کا حل نکالتی ہیں، کورونا وبا میں اپنے شہریوں کوامداد ومعاونت کی فراہمی کے حوالے سے پاکستان نے دنیا میں مثال قائم کی ہے، حکومت نے وبا کے دوران ملک کی آدھی آبادی کو امداد فراہم کی، پاکستان اس وقت ترقی کرے گا جب حکومت اورریاست کا عام آدمی کا ساتھ تعلق ہو، پاکستان اپنی اقلیتوں کے ساتھ مثالی سلوک کر رہا ہے۔میرپورخاص میں سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں امدادی سامان کی تقسیم کے موقع پرمنعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدرمملکت نے کہاکہ حکومت میں یہ سوچ ہے کہ جب کوئی مشکل آتی ہیں تواس صورت میں مدد فراہم کی جائے،حکومتیں محلوں کے اندرنہیں ہوتیں، حکومتیں عوام کی بات کرتی ہیں، عوام کے ساتھ ساتھ ہوتی ہیں اور عوام کی مشکلات کا حل نکالتی ہیں۔انہوں نے کہاکہ کورونا وائرس کی وبا میں دنیا میں پاکستان نے مثال قایم کی،پاکستان کی حکومت نے ایک کروڑ69 لاکھ خاندانوں کو12،12 ہزار روپے کی نقدامداد فراہم کی کیونکہ عوام مشکل میں تھے، ہمارے لوگ بے روزگارہوگئے تھے، ایسے میں لوگوں کوغلہ اورخوراک پہنچانا ضروری تھا اگرایسا نہ کیا جاتا تولوگ بھوک کاسامناکرتے، اس لیے ہندوستان اوردیگرممالک کی طرح پاکستان میں مکمل لاک ڈائون نہیں کیاگیا،ان ممالک میں عوام اورحکومت کے درمیان رابطہ بندہوا،بھارت میں فیکٹریاں بند کرنے سے لوگوں کو 1500 کلومیٹردورتک پیدل جانا پڑا۔عارف علوی کا کہنا تھا کہ پاکستان ایساملک ہے جہاں وزیراعظم نے کہاکہ فیکٹریاں بند نہیں ہوںگی اورلوگوں کو گھروں میں امدادپہنچائی جائیگی، حکومت نے وبا کے دوران ملک کی آدھی آبادی کو امداد فراہم کی۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی کوششوں سے اس وبا پرقابوپایاگیا، ہماری مساجد کھلی رہیں اورلوگوں کا اپنے رب سے رابطہ جڑا رہا ،دنیامیں لوگ کہہ رہے ہیں کہ پاکستان سے سیکھو۔ ہماری خوش نصیبی ہے کہ عوام نے ہمت دکھائی اورنماز اورکام جاری رکھا، اللہ نے مدد کی اوربیماری پاکستان سے تقریباً ختم ہوگئی ہے لیکن احتیاط ابھی بھی ضروری ہے۔صدرنے امدادی سرگرمیوں میں شیخ خلیفہ بن زیدٹرسٹ ، یواے ای کی حکومت اوردیگراداروں کاشکریہ اداکیا۔