ہیرے کے پیچھے چھپی سائنس

585

ہیرے دولت اور خوبصورتی کے ساتھ ساتھ طاقت کی علامت بھی سمجھے جاتے ہیں۔ یہ ہیرے حقیقت میں کوئلے اور بلیک کاربن (گریفائٹ) کا مجموعہ ہیں جو زمین کے اندرونی حصے میں بنتے ہیں۔

ہیرے لاکھوں سال پہلے زمین کے بیرونی خول سے سینکڑوں کلومیٹر نیچے اندرونی پرتوں میں بنے تھے۔ سخت زمینی دباؤ اور انتہائی درجہ حرارت کاربن کے ایٹموں کو ٹھوس کرسٹل کی شکل فراہم کرتے ہیں اور اس طرح خام ہیرے تیار ہوتے ہیں۔ آتش فشاں پھٹتے ہیں تو یہ خام ہیرے زمین کی بالائی سطح تک پہنچ جاتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہیروں کو آتش فشاں کی چٹانوں میں تلاش کیا جاتا ہے۔

ہیرے دیگر جواہرات کی طرح ہی ہیں لیکن یہ ایسی نایاب معدنیات ہے جس کا رنگ، خالص پن، شفافیت اور مضبوطی اسے دوسروں سے ممتاز بناتی ہے اور ہیرے کے تراشنے کا عمل اسے مزید منفرد بنا دیتا ہے۔

ہیرا جتنا نایاب ہو گا اس کی قیمت اتنی ہی زیادہ ہو گی۔ ایک ہیرے کی قیمت اس کی شفافیت، رنگ، تراش اور قیراط طے کرتے ہیں۔ ایک ہیرے کے وزن کی پیمائش قیراط میں کی جاتی ہے۔ ایک قیراط 0.2 گرام کے برابر ہے۔