فلسطینی جماعتیں اختلاف بھلاکر اسرائیلی کیخلاف متحد

365
لبنان: حماس کے رہنما اسماعیل ہنیہ صبرا اور شاتیلا کیمپ میں فلسطینی پناہ گزینوں سے ملاقات کررہے ہیں

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) متحدہ عرب امارات کی جانب سے اسرائیل سے تعلقات کی بحالی کے بعد پیدا ہونے والی صورت حال کے تناظر میں فلسطینی جماعتیں آپسی اختلافات بھلا کر صہیونی ریاست کے خلاف متحد ہو رہی ہیں۔ اس سلسلے میں لبنان کے دارالحکومت بیروت میں کل جماعتی فلسطینی مصالحتی کانفرنس کا انعقاد کیا گیا، جس کی سربراہی فلسطینی صدر محمود عباس نے کی۔ انہوں نے کہا کہ فلسطینیوں کو کسی کی حمایت یا ہدایات کی ضرورت نہیں، یہ قوم اپنے حقوق کا مقدمہ خود لڑے گی۔ فلسطینیوں نے امریکی صدر کی سنچری ڈیل منصوبے اور اسرائیل کے ساتھ مل کر الحاق کی صہیونی سازش کو خود ناکام بنایا ہے اور اب قومی نوعیت کے فیصلے فلسطینی جماعتیں آپس میں مل کر طے کریں گی۔ کانفرنس میں اسلامی تحریک مزاحمت حماس کے سیاسی شعبے کے سربراہ اسماعیل ہنیہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قضیہ فلسطین کو اس وقت 3 خطرات کا سامنا ہے۔ ارض فلسطین کو قوم سے غصب کیا جا رہا ہے، تاریخ اور جغرافیہ مسخ کیا جا رہا ہے، سنچری ڈیل اور الحاق کا اسرائیلی منصوبہ روبہ عمل ہے جب کہ ایسے نازک وقت پر عرب بھائی اسرائیل کی صف میں کھڑے ہیں۔ یہ سب عوامل قضیہ فلسطین کو تباہ کرنے کی مذموم سازش ہیں۔ انہوں نے کہا کہ القدس کو اسرائیل کا دارالحکومت بنا کر فلسطینی قوم سے چھیننے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ لاکھوں فلسطینی مہاجرین کے حق واپسی کو ردی کی ٹوکری کی نذر کردیا گیا ہے جب کہ نام نہاد صدی کی ڈیل کے ذریعے عرب ممالک کواسرائیل کے ساتھ تعلقات استوار کرنے کی ترغیب دلائی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیلی ریاست کے جرائم کی روک تھام کے لیے تمام فلسطینی اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کریں، مسلح مزاحمت کا راستہ اختیار کریں اور فلسطینیوں کی حامی قوتوں پر مشتمل اتحاد تشکیل دیا جائے۔ دوسری جانب ترکی نے فلسطینیوں کے درمیان مصالحتی کانفرنس اور سیاسی جماعتوں کی تشکیل کا آغاز کرنے کے اعلان کا خیرمقدم کیا ہے۔ وزارت خارجہ نے اپنے اعلان میں کہا ہے کہ ہم فلسطینی مفاہمت کانفرنس کا خیرمقدم کرتے ہیں اور اس میں فلسطینی سیاسی جماعتوں اور تنظیموں کی شرکت پر ممنون ہیں۔ تحریر ی اعلامیے میں مزید کہا گیا ہے کہ ترکی فلسطین کے لیے ہر طرح کی حمایت، کوشش اور تعاون جاری رکھے گا۔ علاوہ ازیں عوامی محاذ برائے آزادی فلسطین نے اسرائیل کے ساتھ تعلقات استوار کرنے والے ممالک کے خلاف متحدہ محاذ کی تشکیل اور ان کے بائیکاٹ کا مطالبہ کیا ہے۔ مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق عوامی محاذ کے سیکرٹری جنرل احمد فواد نے بیروت کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ فلسطینی قوم اپنے حامی ممالک پر مشتمل اتحاد بنائے اور اسرائیل کے ساتھ دوستی کرنے اور صہیونی ریاست سے تعلقات استوار کرنے والوں کا بائیکاٹ کیا جائے۔