امریکا تحقیقات سے خوفزدہ ،عالمی فوجداری عدالت کی وکیل پر پابندی لگادی

141
امریکی پابندی کا نشانہ بننے والی عالمی فوجداری عدالت کی وکیل فاتوبینسوڈا

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکا نے افغانستان میں جنگی جرائم ظاہر ہونے کے خوف سے عالمی فوج داری عدالت کی خاتون وکیل پر پابندی لگادی۔ خبررساں اداروں کے مطابق آئی سی سی کی پراسیکیوٹر فاتوبینسوڈا افغانستان میں امریکی فوج کی کارروائیوںکی تحقیقات کررہی تھیں۔ وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے اپنے بیان میں کہا کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے جون میں عائد کی گئی پابندی کے تحت آئی سی سی کے ذیلی ادارے کے سربراہ فاکیسو موکوچوکو کو بھی بلیک لسٹ کردیا گیا ہے۔ پابندیوں کے باعث دونوں افراد کو سفر کرنے کی اجازت نہیں ہوگی اور ان کے امریکا میں موجود اثاثے منجمد ہوجائیں گے۔ پومپیو نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آئی سی سی مسلسل امریکا کو نشانہ بنا رہا ہے،جس کے باعث ہم انتہائی اقدام پر مجبور ہوئے۔ مائیک پومیو نے واضح کیا کہ جو افراد اور ادارے دونوں عہدے داروں کی معاونت کرتے پائے وہ بھی انہی پابندیوں کا شکار ہوسکتے ہیں۔ ادھر اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ نے چند افراد کو ویزا جاری کرنے پر بھی پابندی عائد کردی ہے۔ پومپیو کا کہنا تھا کہ یہ افراد امریکی اہل کاروں کے خلاف تحقیقات کرنے میں ملوث تھے، تاہم انہوں نے کسی کا نام ظاہر نہیں کیا۔ واضح رہے کہ فاتوبینسوڈا کو عالمی عدالت نے مارچ میں تحقیقات کرنے کی اجازت دی تھی، تاکہ افغانستان میں ہونے والے جنگی جرائم کو سب کے سامنے لایا جاسکے۔ گزشتہ برس بھی امریکا نے جنگی جرائم کی ممکنہ تحقیقات کے پیش نظر فاتو بینسوڈا کا ویزا منسوخ کردیا تھا۔ تاہم اقوامِ متحدہ اور واشنگٹن کے مابین سمجھوتے کے تحت وہ اب بھی اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل کی جانب سے عالمی عدالت کو اپنے ذمے داریوں سے آگاہ کرنے کے سلسلے میں قانونی طور پر نیویارک کا سفر کرسکتی ہیں۔