ٹرمپ کی نرالی منطق‘ عوام کو 2 ووٹ ڈالنے کا مشورہ

138

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) صدر ٹرمپ نے امریکا کے آیندہ صدارتی انتخابات میں شہریوں کو 2 مرتبہ ووٹ ڈالنے کا عجیب و غریب مشورہ دیا ہے، جب کہ ماہرین کا کہنا ہے کہ ضوابط کے مطابق ایسا کرنا غیر قانونی ہے۔ خبر رساں اداروں کے مطابق امریکی صدر نے شمالی کیرولائنا میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ رائے دہندگان کو چاہیے کہ وہ اپنے ووٹ کے حق کو یقینی بنانے کے لیے ڈاک کے ذریعے ووٹ دینے کے بعد ذاتی طور پر بھی جا کر بھی ایک دوسرا ووٹ ڈال کر آئیں کیوں کہ اگر کسی نے ڈاک کے ذریعے بھیجے گئے ووٹ کو غائب کر بھی دیا تو ذاتی طور پر دیا گیا ووٹ شمار ہوجائے گا۔ واضح رہے کہ امریکا کی کئی ریاستوں میں کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے ڈاک کے ذریعے ووٹنگ پر عمل کا فیصلہ کیا گیا ہے جب کہ امریکی صدر شروع ہی سے اس طریقے کو غیر محفوظ قرار دے رہے ہیں۔امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ مختلف ریاستوں میں جوں جوں ڈاک کے ذریعے سے ووٹ دینے والوں کی رجسٹریشن میں اضافہ ہورہا ہے، ویسے ہی صدر کی جانب سے ووٹ کے اس طریقہ کار کے متعلق غلط دعوے زور پکڑنے لگے ہیں۔ امریکا میں ایک ہی انتخاب میں 2 مرتبہ ووٹ دینا قانونی طور پر جرم ہے جب کہ امریکی صدر کی جانب سے حالیہ بیان پر ملک میں ایک نئی بحث چھڑ گئی ہے۔