ٹیکس ریفنڈز کا حجم 710 ارب سے متجاوز

45

اسلام آباد (آن لائن) ٹیکس دہندگان اور ایکسپورٹرز کے ذمے واجب الاداٹیکس ریفنڈز کا حجم 710 ارب روپے سے تجاوز کر گیا۔مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی کے ادوار حکومت کے اربوں روپے کے ریفنڈز تبدیلی سرکار کے گلے پڑگئے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ایف بی آر کے ذمے واجب الاداٹیکس ریفنڈز کا حجم 710ارب روپے سے بھی تجاوز کر چکا ہے۔ سابقہ ادوار کے
اربوں روپے کے ٹیکس ریفنڈز تحریک انصاف کی حکومت کے گلے پڑگئے ہیں۔ 2007ء سے2018ء تک کے 376ارب روپے ریفنڈز واجب الادا ہیں۔ انکم ٹیکس کی مد میں سب سے زیادہ 568ارب روپے جبکہ سیلز ٹیکس کی مد میں ایف بی آر کے ذمے واجب الادا ٹیکس ریفنڈز کا حجم 142ارب روپے ہے جبکہ 5 لاکھ71ہزار زیرالتوا کیسز میں سے 4لاکھ 70 ہزار کیسز سابق ادوار کے ہیں۔ تحریک انصاف کی حکومت رواں سال 240ارب روپے کے ٹیکس ریفنڈز ادا کر چکی ہے جبکہ مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے ایف بی آر حکام کو فنڈز کا انتظام کرنے کی ہدایت کی ہے۔