سندھ یونیورسٹی میں 73 کروڑ کی کرپشن،3 افسران گرفتار

110

حیدر آباد(اسٹاف رپورٹر)73 کروڑ روپے کی کرپشن کا معاملہ۔ سندھ یونیورسٹی کے وائس چانسلر و دیگر کے خلاف کیخلاف مقدمہ درج۔ تین افسران کو گرفتار۔8مزید اساتذہ و افسران کی گرفتاری کیلیے مختلف شعبہ جا ت پر چھاپے۔ سندھ یونی ورسٹی کے وائس
چانسلرسمیت 60 افسران کے خلاف فنڈزمیں خورد برد کے الزام میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ محکمہ اینٹی کرپشن جامشورو زون نے سندھ یونی ورسٹی کے فنڈز میںخورد برد کے خلاف بڑی کارروائی کرتے ہوئے وائس چانسلرفتح محمد برفت سمیت 60 سے زائد افسران و عملے کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔ سندھ یونیورسٹی کی ٹینڈرکمیٹی کے سرفرازسولنگی، محمد سلیم چانڈیو اور منیر الدین کے خلاف بھی مقدمہ درج کیا گیا ہے۔محکمہ اینٹی کرپشن کے مطابق سندھ یونی ورسٹی کے فنڈزمیں 73 کروڑ روپے کی خورد برد کی گئی جس میں غیر قانونی بھرتیاں اور اختیارات کا ناجائز استعمال بھی شامل ہے۔محکمہ اینٹی کرپشن کے مطابق لائف انشورنس اوریوٹیلیٹی بلزکی مد میںخورد برد کی گئی، جامعہ میں غیر قانونی بھرتیاں کرکے انہیں تنخواہیں جاری کی گئیں، اختیارات کا ناجائزاستعمال کرتے ہوئے وی سی نے 60 لاکھ روپے کی گاڑی خریدی، یونیورسٹی کے خرچ پر10 ممالک کے دورے بھی کیے گئے۔ذرائع کے مطابق سندھ یونیورسٹی کے درجنوں افسران ضمانت قبل از گرفتاری کروانے ہائیکورٹ پہنچ گئے۔ اینٹی کرپشن نے موجودہ اور سابقہ افسران ،رجسٹرار، ڈی ایف، برسر، پرچیز آفیسر، پی ڈی، ٹرانسپورٹ آفیسر، اسٹیٹ آفیسر ودیگر کی تلاش شروع کردی ہے۔