برسات تھمنے کے باوجود شہر کے مسائل میں بے پناہ اضافہ

141

کراچی(اسٹاف رپورٹر)شہر قائد میں مون سون کی بارشوں کے4 روز بعد بھی مسائل کم نہیں ہوئے ہیں،کراچی میں مون سون کی بارش نے حکومت اور بلدیاتی اداروں کی کارکردگی کو بے نقاب کر دیا ہے۔ کراچی میں مون سون کی بارش کیا ہوئی شہر میں مسائل کی برسات ہو گئی۔تفصیلات کے مطابق بارش ختم ہوئے 4روز گزر گئے لیکن شہر قائد کی گلیاں، سڑکیں اور محلے اب بھی پانی میں ڈوبے ہوئے ہیں جبکہ بیشتر سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو گئی ہیں۔ جس کی وجہ سے ٹریفک کی روانی بہت زیادہ متاثر ہو رہی ہے۔کراچی کے علاقے اولڈسٹی ایریا کھارادر میں بھی کئی کئی فٹ پانی کھڑا ہے جبکہ ایوان صدر روڈ بھی پانی میں ڈوبا ہوا ہے۔ راشد منہاس روڈ سے پانی کی نکاسی تو ہو گئی لیکن سڑکوں پر موجود بڑے بڑے گڑھوں نے شہریوں کو اذیت میں مبتلا کر رکھا ہے۔سہراب گوٹھ انڈر پاس میں موجود پانی شہریوں کے مسائل میں اضافے کا سبب بن رہا ہے۔ ڈیفنس کلفٹن کے مختلف علاقوں میں بھی پانی موجود ہے اور وہاں کے رہائشیوں نے گزشتہ روز انتظامیہ کے خلاف احتجاجی مظاہرہ بھی کیا تھا۔شاہراہ فیصل سے میٹروول جانے والی سڑک بیٹھ گئی جسے ٹریفک کے لیے بند کر دیا گیا جبکہ لیاقت آباد پل کے نیچے بھی سڑک میں بڑے بڑے گڑھے بن گئے ہیں جو کسی بھی بڑے حادثے کا سبب بن سکتا ہے۔شہر کے مسائل حل کرنے میں جہاں حکومت اور بلدیاتی ادارے ناکام رہے وہیں پاک فوج کے جوانوں نے شہر کے مسائل حل کرنے کا بیڑا اٹھا لیا جو مشکل میں پھنسے شہریوں کی مدد میں مصروف ہیں۔ دوسری جانب کراچی میں حالیہ طوفانی بارشوں سے جہاں دیگر گوناگوں مسائل سامنے آئے ہیں ایسے میں کراچی ائرپورٹ کے جناح ٹرمینل کے عین سامنے شارع فیصل کو نیشنل ہائی وے این فائیو سے ملانے والے ائرپورٹ فلائی اوور کے جوڑ کھلنے لگے ہیں جن میں کئی انچ کی دراڑ آ گئی ہے جو آنے والے دنوں میں کسی خوفناک حادثے کا سبب بن سکتے ہیں۔