امریکی چین مخالف اقدامات پر عالمی سیاسی جماعتوں کی تنقید

181

بیجنگ: دنیا کے متعدد ممالک کے سیاست دانوں اور معروف شخصیات نے کہا ہے چند امریکی سیاستدانوں کی جانب سے چین کو بدنام کرنے، چین کے داخلی امور میں مداخلت اور چین امریکہ تعلقات کو شدید نقصان پہنچانے کی کوشش سخت قابلِ مذمت ہے۔

غیر ملکی نیوز ایجنسی کے مطابق عالمی سطح پر موجد متعدد سیاسی جماعتوں نے چینی کمیونسٹ پارٹی کی مرکزی کمیٹی کے شعبہ بین الاقوامی تعلقات سے رابطہ کیا جس میں چند امریکی سیاستدانوں کی جانب سے چین کو بدنام کرنے، چین کے داخلی امور میں مداخلت اور چین امریکہ تعلقات کو شدید نقصان پہنچانے کی کوششوں کی سختی سے مخالفت کی گئی۔

چین کے دنیا کی کمیونسٹ پارٹی کی مرکزی کمیٹی کے شعبہ بین الاقوامی تعلقات سے رابطے کے دوران متعدد سیاسی جماعتوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ تمام فریقین مشاورت اور تعاون کی مضبوطی سے عالمی امن، استحکام اور ترقی کا مشترکہ تحفظ کریں گے۔

ایرانی اسلامی اتحاد پارٹی کا کہنا تھا کہ چند امریکی سیاست دانوں کے چین پر حملوں کا کوئی ٹھوس جواز نہیں ہے ۔ان اقدامات کا مقصد امریکی حکومت کے حوالے سے عوام میں پائی جانے والی مایوسی اور دباؤ کو ہٹانا ہے۔ چین عالمی برادری کے سامنے متعدد مواقعوں پر اپنی اہمیت تسلیم کرواچکا ہے۔

پارٹی کا یہ بھی کہنا تھا کہ چین نے اپنے عملی اقدامات سے ثابت کیا ہے کہ وہ ہمیشہ عالمی امن کا داعی ، عالمی ترقی میں معاون ، اور بین الاقوامی نظام کا محافظ رہا ہے۔ امریکی سیاستدانوں کی جانب سے چین مخالف بیانات چینی عوام کو دیگر دنیا کے ساتھ مزید جوڑنے اور مزید تعاون کے فروغ کا موجب ہوں گے۔

روسی فیڈریشن کی کمیونسٹ پارٹی کی مرکزی کمیٹی کے چیئرمین گینادی زوگونوف نے امریکہ کی حالیہ پوزیشن کے حوالے سے کہا کہ کوروناوائرس کے باعث دنیا کے اکثر ممالک میں اقتصادی و سماجی مسائل درپیش ہیں۔ امریکی حکام اپنی سازشوں کو دوہرا رہے ہیں اور اپنے اندرونی مسائل کو حل کرنے کے لیے جارحانہ خارجہ پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے چین کو دبانے کے لئے مختلف حربے اپنائے ہیں ، لیکن ایسی کوششیں مسلسل ناکامی سے دوچار ہوئی ہیں۔