عوام سابقہ حکومتوں سے زیادہ موجودہ حکومت سے خائف ہیں، سراج الحق

543

امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ تبدیلی کے نام پر رچایا گیا ڈرامہ فلاپ ہوگیا ہے،جاگیردارانہ سیاست نے قوم کا مستقبل تاریک اور نسلوں کو تباہ کیا،حکومت اعلانات تک ہی محدود رہی،اقدامات نظر نہیں آئے،حکومت اپنے کسی ایک وعدے کو بھی پورا نہیں کر سکی ۔

ان خیالات کااظہار انہوں نے دیر میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ عوام سابقہ حکومتوں سےزیادہ موجودہ حکومت سے خائف نظر آتے ہیں،پاکستان معاشی بدحالی سے دوچار ہے اور معیشت افغانستان اور بھوٹان سے بھی پیچھے چلی گئی ہے ۔

حکومت کی معاشی پالیسیاں کشکول کی مرہون منت ہیں ۔ روزگار کی آس میں نوجوان رل گئے ہیں،حکومت نے سب سے زیادہ نوجوانوں کے ارمانوں کا خون کیا ۔ نئے لوگوں کو روزگار کی بجائے حکومت نے لاکھوں بر سر روزگار افراد سے بھی روزگار چھین لیاہے ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ تبدیلی کے نام پر آنے والی حکومت کسی ایک شعبے میں مثبت تبدیلی نہیں لاسکی البتہ ہر جگہ منفی تبدیلیاں نظر آتی ہیں،معیشت بہتر ہونے کی بجائے مزید خراب ہوگئی ہے،مہنگائی پہلے سے کئی گنا بڑھ گئی ہے۔

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ بے روزگاری میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے اور لاکھوں لوگ روزگار سے محروم ہو گئے ہیں،احتساب کے بلند بانگ دعوے کر نے والوں نے احتساب کو بھی مذاق بنا کر رکھ دیاہے،جن لوگوں کا احتساب ہونا چاہیے تھا،وہ خود حکومت میں بیٹھے ہیں ۔

انہوں نے کہاکہ وزیراعظم نے دو سال میں اگر قوم سے کیا گیا ایک وعدہ بھی پورا کیا ہے تو وہ بتائیں،کراچی میں وفاقی صوبائی اور شہری حکومتیں ڈوبنے والوں کو بچانے کی بجائے ایک دوسرے کا گریبان پھاڑنے پر تلی ہوئی ہیں،چار دن بعد بھی کراچی سے بارشوں کا پانی نہیں نکالا جا سکا ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ ظالم جاگیرداروں اور مافیا زکا مسلط کردہ استحصالی نظام عام آدمی کی خوشیوں کا قاتل ہے،یہ نظام جاگیرداروں اور سرمایہ داروں کے مفادات کا محافظ ہےاور غریبوں کے لیے اس نظام میں کچھ نہیں ۔

انہوں نے کہاکہ عوام مایوس ہوچکے ہیں ان کی ساری امیدیں دم توڑ چکی ہیں مگر حکمران اب تک لوگوں کو سبز باغ دکھانے اور رات کو دن بتانے پر تلے ہوئے ہیں،اپوزیشن جماعتوں نے ایف اے ٹی ایف کےدباؤپر ہونے والی قانون سازی میں حکومت کا ساتھ دے کر عوام کو مایوس کیا ۔