بیرونی عناصر سنی شیعہ اختلافات کو ہوا دینا چاہتے ہیں، اعجاز احمد ہاشمی

211

لاہور (نمائندہ جسارت) جمعیت علمائے پاکستان کے مرکزی صدر اور نائب صدر متحدہ مجلس عمل پیراعجاز احمد ہاشمی نے کہا ہے کہ محرم الحرام حق و باطل میں فرق سمجھانے اور اسلام کی سربلندی کا مہینہ ہے ۔تحریک کربلا آج کے یزید کو پہچاننے اور اس کیخلاف قیام کا درس دیتی ہے ۔تحریک کربلا کشمیر، فلسطین اور روہنگیا کے مظلوموں کی آس اور حوصلہ بڑھاتی ہے۔ کربلا اسلام کے مطابق عزت سے جینے کا سلیقہ بتاتی ہے۔ آج کے یزید ٹرمپ، نیتن یاہو اور مودی کیخلاف حسینی جذبے سے لڑنے کی ضرورت ہے۔ شہدائے کربلا کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے پیر اعجاز ہاشمی نے کہا کہ حسین ؓ کی قربانی حضرت اسماعیل علیہ السلام سے زیادہ ہے، کیونکہ حضرت ابراہیم علیہ السلام کو بیٹا قربان کرنے کا حکم ہو ا تو دنبہ قربان ہوگیا مگرنواسہ رسولﷺ کی اپنی قربانی ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ حضورپر نور حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اپنے نواسے حضرت حسینؓ سے محبت اپنی جگہ لیکن ’’الحسین منی وانا من الحسین‘‘ کا فرمان اہلبیت کی عظمت کی دلیل ہے جس میں سید المرسلین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم فرماتے ہیں حسین مجھ سے ہے اور میں حسین سے ہوں۔ حیرت ہے کہ حضرت حسنین کریمین کی مادر گرامی حضرت فاطمۃ الزہرؓ کی شان میں گستاخی کر کے بھی کچھ عناصر مسلمان ہونے کا دعویٰ کرتے ہیں۔ جے یو پی کے مرکزی صدر نے زور دیا کہ محرم الحرام میں شرپسندی اور فساد پیدا کرنے والوں سے آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے اور تفرقہ بازی کی اجازت نہ دی جائے، کیونکہ کچھ شرپسند بیرونی ایجنڈے پر سنی شیعہ اختلافات کو ہوا دے کر اپنا کاروبار چلانا چاہتے ہیں، تاریخ گواہ ہے کہ دونوں مکاتب فکر کی سنجیدہ قیادت نے اغیار کی سازشوں کو ناکام بنایا ہے۔ عوام افواہوں اور نفرت پھیلانے والے مقررین کی باتوں کو مسترد کر کے ہم آہنگی کو فروغ دیں۔