اسرائیلی فوج کی بربریت جاری، فسلطینیوں کے 8 گھرمسمار کر دیے

292

غزہ کے مغربی کنارے راملہ کے علاقے میں اسرائیلی فوج نے فلسطینیوں کے 8 گھر مسمار کر دیئے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق  مشرقی راملہ کے ایک رہائشی عبدالرحیم مصلح  کا کہنا ہے کہ اسرائیلی فوج نے علی الصبح علاقے میں زبردستی داخل ہو کر لوگوں کو گھروں سے نکالا اور ان کے گھر بڑی مشینوں کے ذریعے مسمار کر دیئے۔

ان گھروں میں رہائش کے علاوہ فلسطینیوں نے بھیڑ بکریاں بھی پالی ہوئی تھیں،اسرائیلی فوج نے تمام گھر مسمار کر کے سامان بھی توڑ پھوڑ دیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسرائیلی حکومت نے راملہ کے سی ایریا میں مکانات تعمیر کرنے سے پہلے این او سی حاصل کرنے کی شرط عائد کی ہوئی ہے، اسرائیلی حکام این او سی جاری نہیں کرتے اور لوگ بغیر این او سی کے تعمیر کر لیتے ہیں۔

خیا ل رہے اس وقت راملہ کی وادی السق میں فلسطینیوں کے 200 گھر موجود ہیں، یہاں رہائش کے ساتھ ساتھ تجارت کے لئے بھیڑ بکریاں بھی پالی جاتی ہیں۔

مغربی کنارے کے  اے ایریا کا 18 فیصد علاقہ فلسطینی اتھارٹی کے کنٹرول میں ہے جہاں سیکیورٹی فراہم کی جاتی ہے۔

بی ایریا کا 21 فیصد علاقہ فلسطین کی سول اتھارٹی کے پاس ہے لیکن اس کی سیکیورٹی اسرائیلی فوج کےقبضے میں ہے۔

سی ایریا مغربی کنارے کا 61 فیصد علاقہ اسرائیلی کنٹرول میں ہے،جہاں آئے روز عوام الناس پر مظالم ڈھائے جاتے ہیں۔