ملک لوٹنے والے واجب القتل ہیں، وفاقی وزیر برائے ہوا بازی

247

ٹیکسلا: وفاقی وزیربرائے ہوا بازی غلام سرور خان کا کہنا ہے کہ 35 سال سے ملک لوٹنے والے واجب القتل ہیں، اتنا ظلم ہلاکو خان اور چنگیز خان نے نہیں کیا جتنا دو جماعتوں نے ملک کے ساتھ کیاہے ۔

ٹیکسلا میں قائم لیبر کمپلیکس کے 504 فلیٹس کے ترقیاتی کام کا جائزہ لینے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے غلام سرور خان نے کہا کہ 35 سال سے ملک کو لوٹنے والوں کا احتساب ہوناچاہیے، اتنا ظلم ہلاکو خان اور چنگیز خان نے نہیں کیا جتنا دو جماعتوں نے ملک کے ساتھ کیا۔

وفاقی وزیر نے کاہ کہ نیب میرے خلاف بھی تحقیقات کررہا ہے مجھے اس سے کوئی پریشانی نہیں ہے، میں نے ایوان میں کھڑے ہو کر نیب کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا تھا کہ میرا اور میرے خاندان کا احتساب کیا جائے لیکن جن لوگوں نے 35سالوں میں پاکستان کو لوٹا، ان کا بھی احتساب ہونا چاہیے، جنہوں نے اس ملک کو لوٹا، وہ واجب القتل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے دو سال انتہائی مشکل سے گزارے ہیں، سابقہ حکومت جاتے ہوئے ملک کو دیوالیہ کرگئی، قوم کے لیے آج بھی چور ڈاکو ہیرو اور ہمدردیاں ان کے ساتھ ہیں۔

غلام سرور خان نے کہا کہ ملک میں مافیا کام کررہی ہے جس کی وجہ سے مہنگائی آئی ہے،مہنگائی، چینی اور گندم کے بحران میں کاروباری مافیا کا اہم کردار ہے،سندھ میں چینی کی اسمگلنگ اور ذخیرہ اندازوی کی جاتی ہے۔

غلام سرور خان نے بتایا کہ 760 جعلی ڈگری والے ملازمین کو فارغ کرچکے ہیں جس میں 28 پائلٹس کے لائسنس منسوخ کرکے نکال چکے ہیں۔