اسرائیلی اخبار میں اماراتی ایلچی کا خصوصی کالم

352

امریکا میں متحدہ عرب امارات کے ایلچی نے اسرائیل کےساتھ تعلقات معمول پر لانے کے اقدام کے سلسلے میں اسرائیلی روزنامے (وائے نیٹ) میں خصوصی کالم شائع کردیا۔

یوسف الوطعیبہ نے کہا کہ اسرائیل اور عرب امارات درمیان معاہدے کے بعد سے فلسطینی کاز اٹھانے میں مدد ملے گی، اسرائیل کے مغربی کنارے کے کچھ حصوں کو منسلک کرنے کے منصوبوں کے بارے میں، انہوں نے لکھا:’حال ہی میں، اسرائیلی رہنماؤں نے متحدہ عرب امارات اور دیگر عرب ریاستوں کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کے بارے میں پُرجوش گفتگو کو فروغ دیا ہے، ہم اگلے اکتوبر میں دبئی میں ہونے والی ورلڈ ایکسپو میں اسرائیلیوں کےاستقبال کرنے کے منتظر ہیں۔

واضح رہے کہ متحدہ عرب امارات، مصر اور اردن کے بعد اسرائیل کے ساتھ مکمل سفارتی تعلقات قائم کرنے والی پہلی خلیجی ریاست جبکہ تیسری عرب قوم ہے۔

دوسری جانب فلسطین کی مزاحمتی تحریک حماس، الفتح سمیت فلسطینی اتھارٹی نے اسرائیل یو اے ای معاہدے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ‘اسرائیل فلسطینوں پر مظالم ڈھا رہا ہے جبکہ ان کے حقوق کو نظرانداز کرتا ہے’۔

ترکی ، ایران، شام لیبیا سمیت دیگر ممالک نے اسرائیل یو اے ای معاہدے پر سخت برہمی اظہار کیا ہے جبکہ ترکی نے عرب امارات کو دھمکی کی ہے کہ اسرائیل کے ساتھ تعلقات کی بحالی کے بعد اپنا سفیر بلا لیں گے۔