ہر 3 میں سے ایک برطانوی کمپنی تباہی کے دہانے پر ہوگی، سروے

257
FILE - In this Tuesday, June 30, 2020 file photo, members of the public walk past a closed shop in Leicester city centre, England. The U.K. economy has officially fallen into a recession after official figures showed it contracting by a record 20.4% in the second quarter as a result of lockdown measures put in place to counter the coronavirus pandemic. The slump recorded by the Office for National Statistics follows a 2.2% quarterly contraction in the first three months of the year. (AP Photo/Rui Vieira, File)

لندن: برطانیہ میں معیشت سے متعلق ایک سروے کیا گیا جس میں خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ رواں برس ستمبر کے آخر تک ہر 3 میں سے ایک برطانوی کمپنی تباہی کے دہانے پر پہنچ جائے گی۔

برطانوی خبررساں ادارے بی بی سی کے مطابق برطانوی خبر رساں ادارے بی بی سی کے مطابق ملک میں بیروزگاری کی شرح تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہے جبکہ صرف جون کے مہینے میں 1 لاکھ 39 ہزار سے زائد افراد اپنی ملازمتوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

کرونا وائرس وبا اور اس کے نتیجے میں ہونے والے طویل عرصے پر مبنی لاک ڈاؤن کے باعث برطانیہ کی معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہے۔

ایک سروے کے مطابق سن 2009 کے بعد سے اب تک 11 سال کے دوران ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ برطانیہ کساد بازاری کا شکار ہوا ہے۔