جماعتِ اسلامی نے باہمی معاونت کا پاس کردہ حکومتی بل مسترد کردیا

293

لاہور: امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے حکومت کے پاس کردہ باہمی معاونت کے بل پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ عالمی دباؤ پر قانون سازی ملک و قوم کے مفاد میں نہیں۔

سینیٹر سراج الحق نے اپنے بیان میں کہا کہ باہمی معاونت کا بل پاکستان کو ہمیشہ کے لیے عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) اور ورلڈ بینک کی غلامی میں دینے کے لیے پاس کیا گیا ہے۔

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ بل پاس کرانے میں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن) نے ماضی کی طرح حکومت کے خاموش سہولت کار کا کردار ادا کیا، عالمی دباؤ پر قانون سازی ملک و قوم کے مفاد میں نہیں، حکومت مشاورت کرتی ہے اور نہ ہی رائے عامہ کا احترام کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف نے ہمیشہ بڑی جماعتوں کے ساتھ کچھ لو اور کچھ دو کا معاملہ کر کے معاملات طے کیے ہیں۔

سینیٹر سراج الحق نے مزید کہا کہ حکومت نے چند ڈالرز کے عوض ملکی آزادی اور خود مختاری کا سودا کیا ہے، ہم اس باہمی معاونت کے بل کو مسترد کرتے ہیں، ہم آزاد ملک کے آزاد شہری ہیں اور اپنی آزادی و خود مختاری کا تحفظ کرنا ہمارا فرض ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس بل کے تحت پاکستانی شہری دوسرے ممالک کے حوالے کیے جائیں گے۔