روزنامہ جسارت کے مدیر اعلیٰ سیداطہر علی ہاشمی کو سپرد خاک کردیا گیا

451

کراچی(رپورٹ:منیر عقیل انصاری) پاکستان کے مایہ ناز سینئر صحافی روزنامہ جسارت کے ایڈیٹر انچیف، معروف کالم نگار، کراچی پریس کلب کے سینئر رکن سید اطہر علی ہاشمی کو جمعرات کے روز کراچی کے سخی حسن قبرستان میں سپرد خاک کر دیا گیا، وہ جمعرات06اگست کی صبح فجر کے وقت نیند کے دوران رضا الٰہی سے انتقال کر گئے تھے، انکی عمر74 برس تھی۔

انہوں نے سوگواران میں بیوہ اور تین بیٹے چھوڑے ہیں۔مرحوم کے ایصال ثواب کے لئے 8اگست بروز ہفتہ بعد نماز عصر تک مغرب سید اطہر علی ہاشمی کے گھر بلاک12 گلستان جوہر میں فاتحہ اور قرآن خوانی کا اہتمام کیا گیا ہے۔ سید اطہر علی ہاشمی کی نماز جنازہ جمعرات کو بعد نماز ظہر مسجد شہباز بلاک 12 گلستان جوہر میں ادا کی گئی جبکہ تدفین سخی حسن قبرستان میں ہوئی۔

نماز جنازہ میں اہل خانہ، عزیز و اقارب،سیاسی،سماجی و مذہبی جما عتوں کے رہنماؤں، سینئر صحافیوں،اخبارات کے مدیران، کاروباری شخصیات، اور صحافتی تنظیموں کے رہنماؤں اور عمائدین شہرسمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

نماز جنازہ میں روزنامہ جسارت کے ایڈیٹر مظفر اعجاز،جسارت کے منتظم اعلی سیدطاہر اکبر،عبد الر حمن سمیت جسار ت کے کارکنان،پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس دستور، کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور، کراچی پریس کلب کے صدر امتیاز خان فاران و دیگر عہداران، سینئر صحافی نصیر الدین ہاشمی، مقصود احمد یوسفی، اے ایچ خانزادہ، جلیس سلاسل،شبیر ابن عادل،راشد عزیز، کے یو جے برنا کے صدر حسن عباس، امیر جماعت اسلامی کراچی حا فظ نعیم الرحمن، مسلم پر ویز، اسامہ رضی، سیکرٹری اطلاعات زاہد عسکری، جامعہ بنوری ٹاؤن کے طلحہ رحمانی،فاران کلب کی جانب سے جوائنٹ سیکر ٹری سلیم قریشی،سید اطہر علی ہاشمی کے شاگردوں کی بڑی تعداد سمیت دیگر اہم شخصیات نے شرکت کی۔

اخبارات کے مدیران، سینئر صحافیوں، کاروباری شخصیات، سیاسی، سماجی اور صحافتی تنظیموں کے رہنماؤں نے سید اطہر علی ہاشمی کی صحافتی خدمات پر انہیں خراج عقیدت پیش کیا۔سید اطہر علی ہاشمی کے انتقال پر پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس (دستور) کے جنرل سیکرٹری سہیل افضل خان،کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور کے صدر محمد ریا ض ساگر،سیکرٹری محمد عارف خان اور اراکین مجلس عاملہ، کراچی پریس کلب کے صدر امتیازخا ن فاران، سیکریٹری ارمان صابر نے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کر تے ہوئے مرحوم کے اہلِ خانہ و پسماندگان سے دلی تعزیت کا اظہار کیا ہے دعا کی ہے کہ اللہ تعالی مرحوم کے درجات بلند فرمائے اور جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام اور لواحقین کو صبرجمیل عطا فرمائے۔

سید اطہر علی ہاشمی 44 برس سے صحافت سے وابستہ تھے وہ نہ صرف اردو کے استاد تھے بلکہ ان لوگوں میں شامل تھے جنہوں نے نوجوانوں کی ایک بڑی تعداد کو صحافت کرنا سکھائی ہے۔ان کا شمار عرب نیوز،اردو نیوز جدہ کے بانیوں میں ہوتا تھا اس کے علاوہ وہ روزنامہ امت کے ڈپٹی ایڈیٹر انچیف بھی رہے۔اطہر علی ہاشمی کو زبان و بیان پر گہری گرفت حاصل تھی۔ان کا مشہور کالم ’خبر لیجیے زباں بگڑی‘ اردو دانی کے لحاظ سے سند کی حیثیت رکھتا ہے جس میں وہ اردو زبان کی بول چال میں رائج غلطیوں کی نشاندہی اور ان کی تصحیح کرتے تھے۔ مرحوم کا یہ کالم مختلف اخبارات کی ویب سائیڈپر شائع ہورہا ہے۔