پاک افغان بارڈر: دھرنے کے شرکا پر شیلنگ, 3 جاں بحق, 20 زخمی

317

چمن : پاک افغان بارڈر باب دوستی پر دھرنا کے شرکاء کا سیکیورٹی اہلکاروں سے تصادم ہوا، جس کے نتیجے میں 20افراد زخمی ہوگئے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق  لیویز حکام کا کہنا ہے کہ باب دوستی کی دونوں جانب 2ہزار سے زائد مسافر پھنسے تھے،جنہوں نے زبردستی سرحد عبور کرنے کی کوشش کی، سینکڑوں مظاہرین باب دوستی پر ریڈ زون میں داخل ہوگئے،مظاہرے کے شرکاء نے نادرا دفتر کے کمپیوٹر رومز  سمیت باب دوستی کے ساتھ واقع قرنطینہ سینٹر کو بھی آگ لگادی،مظاہرین نے قرنطینہ کا سامان  بھی لوٹ لیا، شہر میں بھی حالات کشیدہ ہوگئی۔

مظاہرین کو منتشر کرنے کےلیے سیکیورٹی فورسزکے اہلکاروں نے شیلنگ اور ہوائی فائرنگ کی جس کے نتیجے میں 20 افراد زخمی ہوگئے،جن کو فوری طبی امداد کے لیے قریبی اسپتال منتقل کردیا گیا، جن میں سے کئی کی حالت نازک ہے، جبکہ 3افراد جاں بحق ہوگئے ہیں، تصادم کے دوران دھکم پیل اور شیلنگ سے کئی خواتین اور بچے بےہوش ہوگئے ہیں۔

ایم ایس ڈاکٹر عبدالمالک کا کہنا ہے کہ ڈی ایچ کیو اسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے،  ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کو بھی طلب کرلیا گیا ہے۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ پاک افغان بارڈر باب دوستی پر دھرنا کے شرکاء سے تصادم کے بعدسرکاری عمارت کی سیکیورٹی بڑھادی گئی،شہر میں ہائی الرٹ جاری کرتے ہوئے داخلی راستوں پر پولیس  کی بھاری نفری تعینات کردی گئی ہے۔

خیال رہے کہ آل پارٹیز تاجر اتحاد محنت کش گروپ کا 2ماہ سے سرحد کی بندش کے خلاف دھرنا جاری ہے۔