عدلیہ مخالف بیان: عدالت نے افتخار الدین پر فرد جرم عائد کردی

154

اسلام آباد: عدلیہ مخالف وڈیو بیان کیس میں سپریم کورٹ نے آغا افتخار الدین پر فرد جرم عائد کردی۔

چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی جس میں آغا افتخار الدین عدالت کے روبرو پیش ہوئے۔

آغا افتخار الدین نے عدالت میں کہا کہ ویڈیو بیان پر انتہائی معذرت خواہ ہوں، بطور مسلمان آپ سے معافی چاہتا ہوں، مجھے ویڈیو کی اپ لوڈنگ اور ایڈیٹنگ کا علم نہیں۔

چیف جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیے کہ یہ معافی والا کیس نہیں ہے، آپ عدالت سے مذاق نہیں کرسکتے، اس طرح تو سارا نظام فیل ہو جائے گا۔

جسٹس گلزار نے کہا کہ آپ وہ زبان استعمال کر رہے تھے جو کوئی جاہل بھی نہیں کرسکتا، آپ کے گزشتہ تحریری جواب سے بھی مطمئن نہیں۔

عدالت نے افتخار الدین کو تحریر جواب کے لیے ایک ہفتے کی مہلت دیتے ہوئے کیس کی سماعت ملتوی کردی۔