کلبھوشن نے سزا کے خلاف نظرثانی اپیل دائر کرنے سے انکار کردیا

263

پاکستان میں دہشتگردانہ کارروائی میں ملوث ہونے کااعتراف کرنے والے بھارتی نیوی کے حاضرسروس کمانڈر و جاسوس کلبھوشن جادھونےاپنی سزاکےفیصلے کادوبارہ جائزہ لینےکیلیےاپیل دائر کرنےسےانکارکردیا۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل احمد عرفان اور ڈی جی جنوبی ایشیازاہد حفیظ کی نیوز کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن نے اپنی سزا کے خلاف نظر ثانی درخواست سے انکار کیا ہے۔

ڈی جی جنوبی ایشیا زاہد حفیظ  نے کہا کہ پاکستان کا قانون فیصلے کاازسرنوجائزہ لینے کی اجازت دیتاہے، بیس مئی کو پاکستان نے آئی سی جے ریویو اینڈ ری کنسیڈریشن آرڈننس لاگو کیا  اس آرڈننس کے تحت نظر ثانی کی پٹیشن اسلام آبادہائیکورٹ کی جانی چاہیے،آرڈننس کےتحت نظرثانی درخواست ساٹھ دن کے اندر کرنی ہوتی ہے  کمانڈر کلبھوشن یا اسکا وکیل رحم کی اپیل دائر کرسکتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ سترہ جون دوہزار بیس کو کمانڈر جادھو کو نظر ثانی کی اپیل دائر کرنے کی دعوت دی گئی مگر کلبھوشن جادھونےاپنی سزاکےفیصلے کادوبارہ جائزہ لینےکیلیےاپیل دائر کرنےسےانکارکیا۔

ڈی جی جنوبی ایشیازاہدحفیظ کا کہنا تھا کہ پاکستان اپنی عالمی ذمے داریوں سےبخوبی آگاہ ہے اور پاکستان عالمی عدالت انصاف کے فیصلے پر عمل درآمد کیلیے تیار ہے،امید ہے بھارت اس معاملے پر سیاست کرنے کے بجائے قانونی طریقہ اختیار کریگااورتعاون کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اس سے قبل بھی کمانڈر جادھو کی اہل خانہ سے ملاقات کراچکا ہے اور پاکستان نے دوبارہ بھی کمانڈر جادھوکی اہلیہ اوروالد سے ملاقات کرانے کی پیشکش کی ہے۔