تاجر کے قتل و اغواء کے مقدمے میں عزیر بلوچ پر فرد جرم عائد

203

کراچی میں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے تاجر کے اغواء برائے تاوان اور قتل کے مقدمے میں لیاری میں دہشت کی علامت سمجھے جانے والے گینگ وار کے سرغنہ عزیر بلوچ پر فرد جرم عائد کردی۔

تفصیلات کے مطابق انسداد دہشت گردی کی عدالت میں عزیربلوچ کوسخت سیکیورٹی میں چہرہ ڈھانپ کراور ہتھکڑی لگا کرپیش کیا گیا، عدالت میں پیشی کے دوران فاضل جج نے مجرم کو فرد جرم پڑھ کر سنائی تاہم ملزم نے صحت جرم سے انکار کردیا۔

عزیر بلوچ  پر تاجر عبدالصمد کے اغواء برائے تاوان اور قتل کا الزام ہے، عزیر بلوچ ملزم نے 10 لاکھ روپے تاوان طلب کیا اور70ہزارروپے لینےکے باوجود مغوی کوقتل کردیا تھا۔

دوسری جانب کٹہرے میں کھڑے لیاری گینگ وار کے سرغنہ نے نفی میں سر ہلا کر صحت جرم سےانکار کیا ، عدالت نے ملزم کے انکار پر آئی اواور گواہان کونوٹس جاری کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر گواہان کو پیش کرنے کا حکم دیا۔

سینٹرل جیل میں عزیر بلوچ کی پیشی کے موقع پر عدالت میں رینجرز کی بھاری تعینات تھی ، مذکورہ مقدمے میں عزیر بلوچ کا بھائی زبیر بلوچ ودیگر گرفتار ہیں اور دیگر ملزمان پر پہلے ہی فرد جرم عائد کی جاچکی ہے۔