نائب امیر جماعت اسلامی کے پی کے کا محلہ جوگن شاہ ڈبگری کا دورہ

67

پشاور(وقائع نگار خصوصی) نائب امیر جماعت اسلامی وممبرصوبائی اسمبلی خیبرپختونخوا عنایت اللہ خان نے محلہ جوگن شاہ ڈبگری کا دورہ کیااور شیخوپورہ میں سکھ یاتریوں کی گاڑی کو پیش آنے والے حادثے پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے زخمیوں کیلیے جلد صحت یابی کی دعا کی ہے اور حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ جاں بحق ہونے والے سکھوں کو معاوضہ کی ادائیگی اور زخمیوں کو علاج معالجے کی بہترین سہولتیں مہیا کرے ، اس غم کی گھڑی میںسکھ برادری کے ساتھ ہیں۔سانحے پر افسوس کا اظہا رکرتے ہیں ۔ انہوں نے متاثرہ خاندانوں سے گہری ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کیا۔اس موقع پراقلیتی ممبرصوبائی اسمبلی سردار رنجیت سنگھ ، جماعت اسلامی کے ضلعی جنرل سیکرٹری قاری احمد سعید ، میڈیا کوآرڈینیٹر اقبال احمد خان ، ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات قمر حیات اور دیگر بھی موجود تھے ۔ عنایت اللہ خان نے سکھوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ موجودہ حکومت میں ٹرین حادثوں میں مسلسل اضافہ ہورہاہے اور حکومت ٹرین حادثوں پر قابوپانے میں ناکا م رہی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ اسلام تمام مذاہب کے لوگوں کو عزت و احترام دیتا ہے اور ان کے حقوق کی حفاظت کرتا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ حکومت حادثے میںجاںبحق اور زخمی ہونے والے افراد کے لیے معاوضے کا اعلان کریں ۔انہوںنے کہاکہ پاکستان میںٹرین حادثے بڑھتے جارہے ہیں اور ہمیں اس پر تشویش ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ مہذب معاشروں میں اس طرح کے بڑے حادثوں پر ریلوے وزرا اور ذمے دار افراد مستعفی ہوجاتے ہیں مگر ہمارے ہاں مسلسل ٹرین حادثے ہورہے ہیں اور اس میںسیکڑوں افراد جاں بحق ہوئے ہیں لیکن کوئی ذمے داری قبول کرنے کے لیے تیار نہیں ہے۔انہوںنے کہاکہ ٹرین حادثوں میں ڈرائیور پر ملبہ ڈالا جارہا ہے پی آئی اے حادثوں پر جاں بحق پائلٹس پرذمے داری ڈالی جارہی ہے اور ذمے دار افراد کو بچایا جارہا ہے ۔ انہوںنے مطالبہ کیا کہ اس بڑے حادثے کی مکمل تحقیقات ہونی چاہیے اور ریلوے کے ذمے داران کا قرار واقعی سز ا دی جائے تاکہ مستقبل میںایسے حادثات کی روک تھام ہوسکے۔