ایران ،آتشزدگی سے جوہری تنصیب کو زبردست نقصان

86

تہران (انٹرنیشنل ڈیسک) ایران کے نطنز جوہری تنصیب میں آگ لگنے سے جوہری مادوں کو افزودہ کرنے والے ایک سینٹری فیوجز اسمبلی سینٹر کو کافی نقصان پہنچا ہے، تاہم حکام کے مطابق اس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ ایران نے اس بات کی تصدیق کر دی ہے کہ اس کے زیر زمین نطنز جوہری تنصیب میں آگ لگنے سے ایک سینٹری فیوجز اسمبلی سینٹر کو کافی نقصان پہنچا ہے۔ ایرانی خبر رساں ادارے ارنا کے مطابق آتشزدگی کایہ واقعہ جمعرات کو پیش آیا تھا۔ پہلے ایرانی حکام نے اس واقعے کو معمولی بتا کر ٹال دیا تھا، تاہم 3 روز بعد ایرانی اٹامک انرجی آرگنائزیشن کے ترجمان بہروز کمال وندی نے تسلیم کیا کہ آگ کی وجہ سے مرکز کے ایک اہم حصے کو کافی نقصان پہنچا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس واقعے سے ایڈوانس سینٹری فیوجز کے پروڈکشن اور پیش رفت میں اوسط درجے کی سست روی کا سامنا ہوسکتا ہے۔ جس عمارت کو نقصان پہنچا ہے ایران اسے بڑی عمارت سے تبدیل کرے گا، جس میں پہلے سے بھی بہتر آلات اورساز و سامان ہوں گے۔ بیان میں مزید کہا گیا کہ اس واقعے سے کافی نقصان پہنچا ہے، لیکن کوئی جانی نقصان نہیں ہواہے۔ حالاں کہ ابتدا میں جب آگ لگنے کی خبر آئی تھی تو ایرانی حکام نے اسے غیر معمولی بتا کر ٹالنے کی کوشش کی تھی اور یہ دعویٰ کیا تھا کہ عمارت کا صرف ایک چھوٹاحصہ ہی متاثر ہوا ہے۔ لیکن اب ایران نے اس بات کو تسلیم کر لیا ہے کہ جوہری تنصیب میں آگ لگنے سے سینٹری فیوجز اسمبلی کے اس مرکزی حصے کو شدید نقصان پہنچا ہے، جس کا افتتاح 2018ء میں کیا گیا تھا۔