اعظم خان نے عدالت میں پیش نہ ہوکر وزیراعظم کو مشکل میںڈال دیا

177

اسلام آباد (آن لائن) پیٹرولیم اسکینڈل میں راتوں رات وزیر اعظم سے پیٹرول کی قیمت میں تاریخی اضافے کی سمری پر دستخط کرانے والے پرنسپل سیکرٹری ٹو پی ایم اعظم خان نے پیٹرول شارٹیج کے خلاف مقدمے میں لاہور ہائی کورٹ میںپیش نہ ہو کر اپنے ساتھ وزیراعظم عمران خان اور ایڈیشنل اٹارنی جنرل کو بھی مشکل میں ڈال دیا ہے۔ اعظم خان پیٹرول بحران کیس میں چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ جسٹس محمد قاسم خان کی طرف سے 2بار طلبی کے باوجود پیش نہیں ہوئے اور 30 جون کی سماعت پر ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ اعظم خان کابینہ کے اجلاس کی وجہ سے پیش نہیں ہوئے۔ جب کہ اس روز اسمبلی کا بجٹ اجلاس تھا اور کابینہ کا کوئی اجلاس نہیں ہوا۔ چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے اعظم خان کی عدم حاضری پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیے تھے کہ “سنا ہے اعظم خان بولتے ہیں تو ان کے منہ سے قانون نکلتا ہے‘ پھر عدالت عالیہ نے انہیں 9 جولائی پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔ عدالت کے روبرو ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے یہ کہہ دیا کہ اعظم خان کابینہ اجلاس کی وجہ سے پیش نہیں ہو سکے، تاہم آئندہ سماعت پر عدالت نے اس غلط بیانی کا نوٹس لے لیا تو اعظم خان نہ صرف خود مشکل میں پڑ سکتے ہیں بلکہ اپنے ساتھ ایڈیشنل اٹارنی جنرل اور حکومت کو بھی مشکل میں ڈال سکتے ہیں۔