کورونا کا علاج چرس ہوسکتا ہے، ماہرین

735

اسرائیلی ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ چرس کے استعمال سے کورونا وائرس کی وجہ سے شدید بیمار کچھ افراد کی علامات کا علاج ممکن ہے۔

اسرائیلی میڈیکل کینابس ریسرچ اینڈ اینوویشن سینٹر حیفہ کے ماہرین کا کہنا ہے کہ  کورونا وائرس کے شکار شدید بیمار کچھ  افراد کی علامات کا علاج ممکن ہے ، اسرائیلی ماہرین نے ریم بیم اسپتال میں طبی مقاصد کیلئے استعمال ہونے والی چرس سے کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کا علاج کرنے کی کوشش کی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ  کورونا کے ایسے مریض جن میں جان لیوا حد تک پھیپھڑوں  کی سوزش پائی جاتی ہے انہیں چرس استعمال کرائی جاسکتی ہے ، تحقیق کے مطابق شدید بیمار متاثرین کو کسی حد تک چرس کے استعمال سے آرام ملتا ہے۔

اسرائیلی میڈیکل ماہر لوریا ہیون کا کہنا ہے کہ اسرائیل میں پہلی مرتبہ لیبارٹری میں تجربات کے دوران کینابس کی مختلف اقسام کے ذریعے کورونا کے علاج میں کسی حد تک مدد ملی ہے۔ ہم چرس کے خون کے سفید خلیوں پر ا ثرات کا جائزہ لے رہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ تحقیق اس بات پر کی جارہی ہےکہ چرس کی کتنی مقدارسوزش کےعمل پر اثر انداز ہوتی ہے۔ چرس خلیوں کے نیٹ ورک میں رابطہ کاری میں مدد دیتی ہے اور امیون سسٹم کو پیغام پہنچانے میں مددگار ثابت ہوتی ہے ۔