کلثوم چانڈیو نے نصرت سحر عباسی کو “باگڑی” کہہ دیا

837

کراچی: رکن سندھ اسمبلی و رہنماء پاکستان مسلم لیگ فنکشنل( پی ایم ایل -ایف) نصرت سحر عباسی سندھ اسمبلی میں وزیر صحت پر بھڑک اٹھیں۔

تفصیلات کےمطابق  اپوزیشن رکن نے صوبائی وزیر صحت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ اربوں روپے این جی او ایمبولینس چلانے کیلئے  دئیے گئے مگرجھرک میں ڈوبنے والے بچوں کو ایمبولینس نہیں ملی، اسی طرح کندھ کوٹ میں ایک خاتون نے کچرے کے ڈھیر پر بچے کو جنم دیا،وہ بچہ علاج نہ ہونے کے سبب چل بسا،وزیر صحت کو اس کا جواب دینا پڑے گا۔

نصرت سحر عباسی کی تقریر کے دوران حکومتی اراکین نے احتجاج کیاجبکہ خواتین کے حقوق کی علمبردار پیپلزپارٹی کے رکن کلثوم چانڈیو نے نصرت سحر عباسی کو “باگڑی” کہہ کر پکارا جبکہ مکیش کمار چاولہ نے اپوزیشن رکن کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ ‘میری بہن اب آپ ٹی وی میں آگئی اب بس کریں’ جیسے الفاظ استعمال کیے ۔

دوسری جانب اس موقع پر  ڈپٹی اسپیکربھی نصرت سحر عباسی کو وارننگ دیتی رہیں  اور ایوان میں ماحول خراب کرنے کا ذمہ دار ٹھہراتی رہیں ۔