افغان سفیر کی امیر جماعت اسلامی سینیٹرسراج الحق سے ملاقات

371

امیر جماعت اسلامی پاکستان سینٹر سراج الحق سے پاکستان میں افغان سفیر شکراللہ عاطف مشعل نے اسلام آباد میں سابق رکن قومی اسمبلی میاں محمد اسلم کی رہائش گاہ پر ملاقات کی جس میں افغانستان اور خطے کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال ہوا۔

اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ہم ایک پرامن اور خوشحال افغانستان چاہتے ہیں اور بین الافغان مذاکرات کو سپورٹ کرتے ہیں،اب وقت آگیا ہے کہ افغانستان کی تمام جماعتیں اور قیادت ایک میز پر بیٹھ جائیں اور باہمی اختلافات کو بات چیت سے حل کریں ۔

انہوں نے کہا کہ اب اگر امریکہ کا افغانستان سے جانا طے ہوگیا ہے تو یہ صدی کا بہت بڑا واقعہ ہوگا،خطے سے امریکی افواج کا انخلاءافغان عوام کی بہت بڑی فتح ہے،افغانستان کے دلیر اور جرات مند عوام نے بیرونی جارحیت قبول کی اور نہ کبھی بیرونی آقاﺅں کو سپورٹ کیا ہے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی نے ہمیشہ افغان عوام کے دکھ دردکو اپنا دکھ درد سمجھتے ہوئے اس میں شرکت کی ہے،پاکستانی قوم نے بھی افغان مہاجرین کو اپنے دلوں اور ملک میں جگہ دی اور ان کو عزت و احترام اور وقار کے ساتھ اپنے پاس ٹھہرایا۔

انہوں نے کہا کہ ایشیاءمیں امن کیلئے افغانستان میں امن انتہائی ضروری ہے اور پاکستان کی ترقی و خوشحالی کیلئے بھی پرامن افغانستان کی ضرورت ہے، کابل میں ہندوستان کا سازشی کرداردونوں برادر اسلامی ممالک کے کیلئے نقصان دہ ہے ۔

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ پاکستان اور افغان عوام کے برادرانہ تعلقات میں مزید نکھار پیدا ہو اور افغانستان اور پاکستان کے نوجوانوں ،طلباء،اساتذہ ،ڈاکٹرز ،انجینئرز اور مختلف شعبوں کے لوگوں کو ایک دوسرے کے تجربات سے فائدہ اٹھانا چاہئے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ اسی طرح پاکستانی اور افغان خواتین کے درمیان گھریلو دستکاریوں سمیت مختلف نوعیت کے امور میں باہمی تعلقات کو فروغ ملنا چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی اور افغان عوام اسلام کے لازوال رشتے میں بندھے ہوئے ہیں دونوں کا ماضی حال اور مستقبل ایک ہے ۔

انہوں  نے کہا کہ افغانستان میں بہت خون بہاہے،اب افغانستان کو ایک پرامن ملک کے طور پر آگے بڑھنا اور دنیا میں اپنا کردار ادا کرنا ہے،کورونا وائرس خطے میں بڑی تیزی سے پھیل رہا ہے،دونوں ملکوں کو پڑوسی ہونے کے ناطے ایک دوسرے کو اس وباءسے بچانے کیلئے باہمی تعاون کی ضرورت ہے ۔

امیر جماعت اسلامی نے گزشتہ دنوں کابل کی مسجد اور ہسپتال میںہونے والے بم دھماکوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے شہداءکیلئے مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعا کی اور افغان سفیر سے اظہار تعزیت کیا ۔