دوبارہ سخت لاک ڈاون کی طرف جا رہے ہیں‘ اعظم سواتی

30

اسلام آباد( آن لائن)نیب نے جعلی اکاﺅنٹس کیس میں وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ کو تحریری سوالنامہ بھجوا دیااور2ہفتوں میں تحریری جواب طلب کرلیا ، ذرائع نے بتایا کہ نیب راولپنڈی نے جعلی اکاﺅنٹس کیس میں وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو تحریری سوالنامہ بھجوا دیا ہے جس میں پوچھا گیا ہے کہ بطور وزیر خزانہ آپ نے روشن سندھ پروگرام میں سیکرٹری فنانس کی تجاویز کو نظرانداز کیوں کیا؟،روشن سندھ پروگرام فزیبلیٹی کے بغیر شروع کیوں کیاگیا؟۔چیف سیکرٹری کے پی سی ٹو کے تحت فزیبلیٹی کی نشاندہی پر بھی توجہ کیوں نہیں دی گئی ؟ ایڈیشنل چیف سیکرٹری نے سولر لائٹس کو ”غیرمعیاری “ کہا اسے کیوں نظرانداز کیاگیا؟نیب کی جانب سے سوالنامے میں مزید پوچھا گیا ہے کہ کیایہ درست ہے سندھ ہائی کورٹ کی قائم کمیٹی کو بھی منصوبے پر مطمئن نہیں کر پائے تھے ؟،کیایہ درست ہے کہ اسکینڈل کے ماسٹر مائنڈشرجیل میمن کے ایما پر آپ نے فنڈز جاری کیے؟سوالنامے میں کہاگیا ہے کہ شرجیل میمن من پسند کمپنیوں کو ٹھیکا دے کر کک بیکس وصول کرچکے ؟ شرجیل میمن کے ساتھ کرپشن میں ملوث ملزم پلی بارگین سے رقم واپس بھی کرچکے کیا،کہیں گے؟۔وزیراعلیٰ سندھ کو2 ہفتے میں تحریری جواب نیب راولپنڈی کے پاس جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہے ، ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعلیٰ سندھ کی دوبارہ طلبی کافیصلہ تحریری جواب کی روشنی میں کیاجائے گا۔