اضافی بل اور طویل لوڈشیڈنگ قبول نہیں کی جائے گی، حافظ نعیم

181

کے الیکٹرک کے اضافی بلوں اور لوڈشیڈنگ نے عوام کا پارہ ہائی کر دیا ہے،حافظ نعیم

امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کے الیکٹرک کی جانب سے لوڈشیڈنگ اور اضافی بلوں نے عوام کا پارہ ہائی کردیا ہے۔

حافظ نعیم الرحمن نے کے الیکٹرک کی جانب سے بھیجے گئےاضافی بلوں کی مزمت کرتے ہوئے کہا کہ  کے الیکٹرک نے کورونا کی وباء اور لاک ڈاؤن  سے متا ثرکراچی کے شہریوں پر بجلی گرادی ہے،شہر قائد میں اضافی بل بھیجے جانے پر شہری بلبلا اٹھے ہیں۔

انہوں نےکہا کہ کراچی میں شدید گرمی اور سمندری ہوائیں بند ہونے کے بعد کے الیکٹرک نے لوڈشیدنگ کا دورانیہ بڑھا دیا اور جن علاقوں کو استشنیٰ حاصل تھا وہاں بھی لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہےجس سے شہری دوہری اذیت میں مبتلا ہو گئے ہیں۔

انہوں نےکہا کہ اضافی بل اور لوڈشیڈنگ عوام پر ظلم ہےکراچی کے گنجان آباد علاقوں میں لوڈ شیڈنگ 9 سے 12 گھنٹے تک کی جارہی ہے۔

 حافظ نعیم الرحمن نے وزیراعظم سے اپیل کی کہ بجلی کے بلز میں شامل مختلف ٹیکسز کو ختم کر کے عوام کو ریلیف فراہم کیا جائے۔ نیپرا عوام پر کے الیکٹرک کے مظالم کا مداوا کرنے کے بجائے بی ٹیم کا کردار ادا کرنے سے باز رہے۔

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ کراچی کے شہری ایک جانب لاک ڈاؤن کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہیں تو دوسری جانب فی گھر ہزاروں روپے کے بل بھیج دیے گئے ہیں، صارفین کے الیکٹرک کے تیز رفتارمیٹرز نصب  کرنے کی بھی شکایات کررہے ہیں جن کی وجہ سے زیادہ یونٹ بن رہے ہیں۔

 انہوں نے کہا کہ اضافی بل اور طویل لوڈشیڈنگ قبول نہیں کی جائے گی، کے الیکٹرک صارفین کو جاری کردہ تمام بل واپس لے کر مناسب بلز جاری کرے ورنہ بھرپور احتجاج کیا جائے گا۔

نیپرا طویل غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ،اوور بلنگ اور فالٹز آجانے کی صورت میں بعض جگہ 12گھنٹے اور کہیں 24 گھنٹے  سے زائد وقت گزر جانے کے باوجود فالٹز درست نہ کرنے پر نوٹس لے کر کے الیکٹرک پر بھاری جرمانہ عائد کیا جائے۔