عدالت عظمیٰ میں شہزاد اکبر کیخلاف توہین عدالت کی درخواست دائر

83

اسلام آباد(آن لائن)عدالت عظمیٰ میںشہزاداکبر کیخلاف توہین عدالت کی درخواست دائرکردی گئی۔ درخواست میںشہزاد اکبر، ایڈیٹرنوائے وقت،اے آر وائی ٹی وی بیورو چیف،ایڈیٹر ڈیلی پاکستان، 92 نیو ز، رنگ ٹی وی،روزنامہ امت کو فریق بنایا گیا ہے۔توہین عدالت کی درخواست محمد عالمگیر خان ایڈووکیٹ کی جانب سے دائر کی گئی ہے ۔درخواست میںموقف اپنایا گیا ہے کہ مئی 2019ء میں صدر مملکت نے قاضی فائز کیخلاف ریفرنس بھیجا، جس پر سپریم جوڈیشل کونسل نے قاضی فائز عیسیٰ کو شوکاز نوٹس جاری کیا تھا،فاضی فائز عیسیٰ نے شوکاز نوٹس کو عدالت عظمیٰ میں چیلنج کیا،جسٹس فائز عیسیٰ نے وزیراعظم کے معاون خصوصی شہزاداکبر کی اہلیت پر سوال اٹھایا، شہزاد اکبر نے 2 جون 2020 ء کو ایک پریس کانفرنس کی،پریس کانفرنس میں جسٹس فائز عیسیٰ کو بدنام کیا اور انہیں ملزم قرار دیا،شہزاد اکبر کی نیوز کانفرنس اخبارات اور نیوز چینلز پر نشر ہوئی،شہزاد اکبر نے بدنیتی اور منفی ارادے کے تحت یہ الفاظ استعمال کیے ہیں، شہزاد اکبر کا یہ بیان پوری عدلیہ کی توہین کے مترادف ہے ،شہزاداکبر حکومت کے ملازم ہیں جو عدلیہ کیخلاف پریس کانفرنس کررہے تھے، حکومت ملازم کو ضرورکسی کی پشت پناہی حاصل ہے ،اس سرکاری ملازم کی پریس کانفرنس سے وزیراعظم سمیت کسی نے لاتعلقی کا اظہار نہیں کیا، درخواست میں عدالت عظمیٰ سے استدعا کی گئی ہے کہ شہزاداکبر کیخلاف توہین عدالت کیس عمل میں لانے سمیت اس پریس کانفرنس کو شائع اور نشر کرنے والوں کو بھی طلب کریں اور کارروائی کی جائے ۔