کراچی میں اچانک آندھی نے تباہی مچا دی، 4افراد جاں بحق، درجنوں زخمی، املاک کو نقصان

191
کراچی: آندھی کے باعث درخت اکھڑ کر سڑک پر پڑے ہیں، چھوٹی تصویرمیں بھینسوں کے باڑے سے شعلے بلند ہوتے دکھائی دے رہے ہیں

کراچی )اسٹاف رپورٹر)کراچی میں اچانک آندھی نے تباہی مچادی۔ خواتین سمیت 4افراد جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوگئے۔ املاک کو بھی نقصان پہنچا۔کھمبے اور درخت اکھڑ گئے،گھروں کے شیشے ٹوٹ گئے۔پورا شہر کافی دیر تک گرد آلود ہواؤں کی لپیٹ میں رہا جبکہ کچھ علاقوں میں آندھی کے بعد بارش بھی ہوئی۔ گلشن معمار فقیراگوٹھ کے قریب دیوارگرنے سے ایک شخص جاں بحق اور 2زخمی ہوئے ہیں۔ سعدی ٹاؤن میں مکان کی دیوار گرنے سے خاتون جاں بحق ہوگئی۔تیسر ٹاؤن میں چھت گرنے سے ایک شخص جاں بحق ہوا، گلشن معمارمیں گھرکی چھت گرنے سے ایک شخص جاں بحق اور 2 زخمی ہوئے۔نارتھ کراچی میں آندھی کے باعث گھروں کے شیشے ٹوٹ گئے، سپر ہائی وے جنجال گوٹھ میں آندھی کے باعث دکانوں کے چھجے اور چھتیں گر گئیں۔آندھی کے باعث چھتیں گرنے سے ایک شخص جاں بحق اور 3 بچوں سمیت 12 افراد زخمی ہوئے جنہیں اسپتال منتقل کردیا گیا۔سرجانی ٹاؤن کے سیکٹر 11میں واقع بھینس کالونی میں بجلی گرنے سے مکان میں آگ لگ گئی جس کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق جبکہ 12 شدید زخمی ہوئے، وقوع کے بعد علاقہ مکینوں نے اپنی مدد آپ کے تحت گھر میں لگنے والی آگ کو بجھانے کی کوشش کی جبکہ زخمیوں کو مکان سے نکال کر اسپتال منتقل کیاجبکہ کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کے مینیجنگ ڈائریکٹر اسد اللہ خان نے بجلی گرنے سے لگنے والی آگ کا نوٹس لیتے ہوئے ٹیموں کو جائے وقوع پر روانہ کیا اور ہائیڈرنٹس کو دیگر ٹینکر سے فوری طور پر خالی کرانے کی ہدایت کی۔آندھی کی وجہ سے شہر کی مختلف شاہراہوں پر ٹریفک متاثر ہوا، شارع فیصل، راشد منہاس روڈ ،یونیورسٹی روڈ پر ٹریفک کا دباؤ رہا ، صدر، ایم اے جناح روڈ، حسن اسکوئر پر بھی آندھی کی وجہ سے ٹریفک کا دباؤ رہا۔محکمہ موسمیات کے مطابق مغربی ہواؤں کا سسٹم ملک سے گزررہا ہے، گرج چمک کے ساتھ بارش کا بھی امکان ہے، شہر کے شمالی حصے میں تھنڈر اسٹارم سیلز بن گئے ہیں۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ آندھی 54سے 74کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلی۔محکمہ موسمیات کے مطابق شہر میں آندھی کے باعث حدنگاہ 500میٹر ہوگئی تھی، عام دنوں میں حد نگاہ 5 سے 6کلو میٹر ہوتی ہے، مغربی سسٹم اور دن میں پڑنے والی گرمی اور نمی کا تناسب ملنے سے آندھی چلی۔محکمہ موسمیات کے مطابق آج جمعرات کو شہر کا موسم گرم اور مرطوب رہنے کا امکان ہے جبکہ شام میں ایک بار پھر آندھی چل سکتی ہے لیکن شدت کل کی طرح زیادہ نہیں ہوگی۔طوفانی ہواؤں کے بعد بیشتر علاقوں میں بجلی کی فراہمی معطل ہوگئی۔ صدر، گلستان جوہر، لیاری، اورنگی ٹاؤن، ملیر، نیوکراچی،کورنگی و دیگر علاقوں میں بجلی معطل ہوگئی۔تیز ہوائیں چلنے کے بعد محکمہ موسمیات کے دفتر کی بجلی بھی معطل ہوگئی۔سرجانی سیکٹر9بھینس کالونی میں اچانک آگ بھڑک اٹھی جس نے دیکھتے ہی دیکھتے تمام باڑوںکو اپنی لپیٹ میںلے لیا جس کے باعث متعدد بھینسیں ہلاک اور سیکڑو ں جھلس گئیں ۔ ایس ایس پی ویسٹ فدا حسین نے بتایا کہ تیز ہواؤں کے باعث آگ بھوسے میں لگی۔سرجانی میں باڑے میں آگ لگنے سے درجن سے زائدمویشیوں کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔ باڑہ مالکان کا کہنا ہے کہ آگ کی اطلاع دینے کے باوجود فائربریگیڈ تاخیر سے پہنچی، آگ کے باعث 250 باڑے جل گئے، فائر بریگیڈ کی گاڑیوں کے پاس پانی نہیں تھا۔ایک باڑے کے مالک عاطف قادری نے بتایا کہ آگ باڑے کو جلا کر خود بجھ گئی تو فائربریگیڈ پہنچی، درجنوں جانور ہلاک ہوگئے، میرے باڑے میں 85 بھینسیں اور دیگر مویشی تھے، کچھ مر گئے کچھ بھاگ گئے۔ترجمان سندھ رینجرز کے مطابق رینجرز کے جوان موقع پر پہنچ گئے تھے اورامدادی کارروائیوں میں پیش پیش رہے، علاقے میں بجلی نہ ہونے کی وجہ سے امدادی کارروائیوں میں دشواری کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ علاوہ ازیں غیر متوقع آندھی کی وجہ سے ائرپورٹ پر ہنگامی اقدامات کیے گئے اور ائرپورٹ کے تمام عملے کو الرٹ کردیا گیا۔ذرائع کے مطابق تیز ہوا کی وجہ سے چھوٹے طیاروں کی حفاظتی مقامات پر فوری منتقلی کا کام شروع کیا گیا جبکہ سول ایوی ایشن نے کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے بچنے کے لیے رات گیارہ بجے کراچی ائرپورٹ آنے والی ائرلائن کی پرواز کا رخ موڑنے کا فیصلہ بھی کیا۔