طیارہ حادثے کی تحقیقاتی کمیٹی پر تحفظات ہیں ٗحافظ نعیم الرحمن

129
امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن طیارہ حادثے میں شہید ہونیوالوںکیلیے دعائے مغفرت دوسری جانب میڈیا سے گفتگو کررہے ہیں

کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیرجماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ طیارہ حادثے کی تحقیقاتی کمیٹی پر تحفظات ہیں،انکوائری کمیٹی میں شفاف تحقیقات کے لیے تمام نمائندے شامل ہونے چاہئیں ، ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ماضی کی طرح اس قومی سانحے کو بھی سرد خانے کی نذر کردیا جائے گا،اصل حقائق جو اس حادثے کی وجہ بنے قوم سے چھپائے جائیں گے۔ان خیالات کااظہار انہوں نے طیارہ حادثے میں شہید ہونے والے دانش الطاف و اہلیہ ،بیٹا اور بیٹی کی نماز جنازہ میں شرکت کے موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔نماز جنازہ میں وائس یوسی چیئرمین توفیق الدین صدیقی ،نائب امیر ضلع فرحان خان ودیگر نے بھی شرکت کی ۔حافظ نعیم الرحمن نے مزید کہاکہ ائرپورٹ کے اطراف بڑی تعداد میں ریسٹورنٹس قائم ہیں جہاں چیل کوے منڈلاتے ہیںاس زاویے کو بھی تحقیقات میں شامل ہونا چاہیے،جہازوں کی آمدورفت کے مقامات پر تعمیرات کی اجازت کس ادارے نے دی اس کی بھی باز پرس ہونی چاہیے۔انہوں نے کہاکہ طیارہ حادثے میں شہدا کی لاشوں کی تصدیق کے عمل میں دشواریوں کاسامنا ہے ،لواحقین کو ان کے پیاروں کی لاشیں حوالے نہیں کی جارہی ہیں ،لواحقین کی پریشانیوں کو دور کیا جائے اور ان کا ازالہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ طیارہ حادثے میں جو گھر تباہ ہوئے ہیں انہیں معاوضہ دیا جائے ،زخمی ہونے والوں کی امداد کی جائے اور رہنے کے لیے متبادل گھر دیے جائیں۔توفیق الدین صدیقی نے کہاکہ جماعت اسلامی طیارہ حادثے میں شہید ہونے والے لواحقین کے ساتھ ہے اور جن لوگوں کے گھر تباہ ہوئے ہیں اور جو بھی زخمی یا شہید ہوئے ہیں حکومت انہیں معاوضہ دے اور قیمتی جانوں کے ضیاع کا ازالہ کرے ۔