عرب ممالک میں 70 لاکھ افراد کے بے روزگار ہونے کا خدشہ

137

جنیوا (انٹرنیشنل ڈیسک) انٹرنیشنل لیبر آرگنائزیشن نے کورونا کی وبا سے پیدا شدہ بحران اور روزگار کے مواقع میں کمی کے نتیجے میں خدشہ ظاہر کیا ہے کہ عرب ممالک میں رواں سال کی دوسری سہ ماہی کے دوران 70 لاکھ سے زائد افراد روزگار سے محروم ہو سکتے ہیں۔ عرب ممالک میں لیبر سے متعلق سرگرمیوں کے امور کے ماہر مصطفیٰ سعید نے کہا کہ کورونا کی وبا پھیلنے کے بعد سے رواں سال کی دوسری سہ ماہی کے دوران پوری دنیا میں تقریبا 10.7 فی صد کام کے اوقات ضائع ہوں گے جو کہ ہر ہفتے میں48 گھنٹوں کے نقصان کے تناسب سے 305 ملین ملازمتوں کے برابر ہے۔ جہاں تک بیشتر عرب ممالک سمیت اس خطے کا تعلق ہے تو مصطفی سعید نے کہا کہ اندازے کے مطابق دوسری سہ ماہی میں 7 لاکھ ملازمتوں کے روزگار چھن جانے کا اندیشہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشی بحالی کے حوالے سے اپنائی جانے والی پالیسیاں اور طریقہ کار دونوں نقصانات کی تلافی میں معاون ثابت ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان طبقہ سب سے زیادہ متاثر ہے۔ دوسری جانب امارات ائر لائنز گروپ نے اعلان کیا ہے کہ کورونا وائرس کے بحران سے پیدا ہونے والی مشکلات کے سبب کمپنی اپنے کچھ ملازمیں کو ملازمت سے فارغ کرنے کی تیاری کررہی ہے، تاہم ان کی تعداد نہیں بتائی گئی۔ امارات ائرلائنز گروپ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اگرچہ مشکل اوقات میں اور وبا کی روک تھام کے اقدامات پر سختی سے عمل کرنے کے فریم ورک کے باوجود کمپنی کی پروازوں کی بحالی کا عمل بہ تدریج شروع ہوگیا ہے، مگر حقیقت یہی ہے کہ کووِڈ 19 کی عالمی وبا نے دنیا بھر کی معیشت پر گہرے منفی اثرات مرتب کیے ہیں۔