کورونا وائرس: صورتحال کی مانیٹرنگ کیلیے پارلیمانی کمیٹی تشکیل

39

اسلام آباد (اے پی پی) کورونا وائرس پر نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کا جائزہ لینے، صورتحال کی مانیٹرنگ اور اس کی وجہ سے ملکی معیشت پر رونما ہونے والے منفی اثرات کے جائزہ کے لیے 25 رکنی خصوصی پارلیمانی کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے۔ جمعرات کو ترجمان قومی اسمبلی کے مطابق اسپیکر کی جانب سے باضابطہ طور پر 25 رکنی پارلیمانی کمیٹی کی منظوری کے بعد پارلیمانی کمیٹی کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔ کمیٹی میں قومی اسمبلی سے 12 اور سینٹ سے 13 پارلیمانی رہنماء شامل ہیں۔ کمیٹی کی صدارت اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کریں گے۔ پارلیمانی کمیٹی میں بلحاظ عہدہ وفاقی وزراء پرویز خٹک اسد عمر، اعظم خان سواتی اور وزیراعظم کے مشیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ اور معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ پارلیمانی کمیٹی کورونا وائرس سے متعلق معاملات کا جائزہ، مانیٹرنگ اور نگرانی کرے گی اور اس صورتحال کے پیش نظر ملکی معیشت پر پڑنے والے منفی اثرات کا بھی جائرہ لے گی۔ کمیٹی میں وفاقی وزراء، مخدوم شاہ محمود قریشی، ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی، چودھری طارق بشیر چیمہ اور شیخ رشید احمد شامل ہیں جبکہ خواجہ محمد آصف مسلم لیگ ن، راجا پرویز اشرف پی پی پی ،اسعد محمود ایم ایم اے کی نمائندگی کریں گے۔ بلوچستان عوامی پارٹی کی نمائندگی خالد حسین مگسی ، بلوچستان نیشنل پارٹی کی محمد اختر مینگل، جی ڈی اے کی غوث بخش خان مہر، جمہوری وطن پارٹی کی نوابزادہ شاہ زین بگٹی اور اے این پی کی امیر حیدر خان ہوتی کمیٹی میں نمائندگی کریں گے۔ سینیٹ سے قائد ایوان سینٹ سینیٹر شبلی فراز، مشاہد اللہ خان، محمد علی سیف، مولانا عبدالغفور حیدری، میر حاصل خان بزنجو شامل ہیں۔ سینیٹر شیری رحمن، محمد عثمان خان کاکڑ، سراج الحق، ستارہ ایاز، ڈاکٹر جہانزیب جمالدین، سیّد مظفر حسین شاہ اور سینیٹر اورنگزیب خان کو شامل کیا گیا ہے۔ پارلیمانی کمیٹی ایک ذیلی کمیٹی بھی قائم کرے گی جو کمیٹی کے مفصل ٹی او آرز مرتب کرے گی۔ کمیٹی اپنی رپورٹ دونوں ایوانوں میں پیش کرے گی۔