بے یقینی……………اجمل سراج

47

شرحِ احوالِ جہاں دیکھیے آخر کیا ہو
اس تماشے کا تو آغاز ہی حیرانی ہے

بے یقینی سے ہے آرائشِ عالم اجمل
کس کو معلوم نہیں ہے جہاں فانی ہے