انٹر بینک میں ڈالر 165روپے پر پہنچ گیا

62

کراچی ( بزنس رپورٹر)کاروباری ہفتے کے چوتھے روز انٹربینک میں ڈالر کی قیمت میں 3 روپے 40 پیسے کا اضافہ ہوگیا جس کے بعد انٹر بینک میں ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔فاریکس ڈیلرز کے مطابق انٹر بینک میں ڈالر 161 روپے 60 پیسے سے بڑھ کر 165 روپے پر پہنچ گیا ہے۔ماہرین کے مطابق شرح سود میں کمی کے فیصلے کے بعد ڈالر کی خریداری کی جارہی ہے جس کے باعث عارضی طور پر اس کی قیمت میں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔کرنسی ڈیلرز کے مطابق کاوربار بند ہونے کی وجہ سے اوپن مارکیٹ بند ہونے سے قیمت جاری نہیں ہوسکی۔گزشتہ روز بھی ڈالر کی قیمت میں3 روپے کا اضافہ ہوا تھا۔گزشتہ سال اگست میں انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت 164 روپے5 پیسے تھی جو اب تک کی بلند ترین سطح تھی۔گزشتہ سال کے آغاز میں ڈالر کی قیمت مسلسل بڑھتی رہی، جنوری میں ڈالر 138 روپے 93 پیسے، فروری میں 138 روپے 90 پیسے اور مارچ میں 139 روپے10 پیسے تک پہنچ گیا۔تاہم جمعرات کی دوپہر انٹر بینک میں امریکی ڈالر 4 روپے 53 پیسے مہنگا ہو کر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں رواں ہفتے کے چوتھے کاروباری روز کے دوران امریکی ڈالر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا ہے، انٹر بینک میں امریکی کرنسی کی قدر میں 4روپے 53 پیسے کا اضافہ دیکھا گیا۔انٹر بینک میں امریکی ڈالر 4 روپے 53 پیسے اضافے کے بعد 166روپے 13پیسے کی سطح پر بند ہوا۔کاروباری ہفتے کے پہلے چار روز کے دوران ڈالر کی قدر 7روپے 46 پیسے بڑھ گئی ہے جس کے بعد غیر ملکی قرضوں میں 7سو ارب روپے کا اضافہ ہو گیا ہے۔