کورونا وائرس: سندھ حکومت نے آلات کی خریداری کے لیے 290 ملین روپے جاری کردیے

408

کراچی: وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے 290 وینٹیلیٹر، 3.2 ملین پرسنل پروٹیکٹو آلات (پی پی ایز)، 100 ریپڈ کٹ اینٹیجن ٹیسٹ مشینیں، ایک لاکھ ٹیسٹنگ کٹس، 50 آر ٹی لیمپ ٹیسٹنگ مشینیں اور 10000 آر ٹی لیمپ کٹس اور 29 پورٹیبل ایکس رے مشینیں خریدنے کی منظوری دی۔

وزیر اعلیٰ ہاؤس میں وزیراعلیٰ سندھ کی زیر صدارت کورونا ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں صوبائی وزراء، مشیر، چیف سیکرٹری، آئی جی پولیس، متعلقہ صوبائی سیکرٹریز، ڈبلیو ایچ او، آغا خان، انڈس اسپتال، کور 5، رینجرز، پی ڈی ایم اے، ایف آئی اے، ایئرپورٹ، سول ایوی ایشن کے نمائندوں اور ٹاسک فورس کے فوکل پرسن نے شرکت کی۔

محکمہ صحت نے بتایا کہ ہمارے پاس صرف 484 وینٹیلیٹرز ہیں، ان میں سے 353 کام کر رہے ہیں، 52 خراب ہیں، 43 ابھی نصب کرنا ہے اور 21 خریدے جارہے ہیں۔

اس پر وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ ہمیں کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے 5000 مزید وینٹیلیٹروں کی ضرورت ہے  مگر پہلے مرحلے میں انہوں نے 290 مزید وینٹیلیٹروں کی خریداری کی منظوری دی۔

وزیراعلیٰ سندھ  کو بتایا گیا کہ چینی سائنس دانوں کا تیار کردہ ریپڈ کٹ اینٹیجن ٹیسٹ مشین (آر کے اے ٹی ایم) میں نمونے جانچنے کا آسان نظام موجود ہے اور یہ ایک بہترین مشینوں میں سے ایک ہے، یہ ایک گھنٹے میں 10 ٹیسٹ کرتا ہے۔

وزیر اعلیٰ سندھ نے 100 مشینیں اور ایک لاکھ اینٹیجن ٹیسٹنگ کٹس خریدنے کی منظوری دی اور محکمہ صحت کو ہدایت کی کہ وہ ابھی حکم جاری کریں۔

انہوں نے کہا کہ میں جلد سے جلد ان کی فراہمی چاہتا ہوں۔وزیر اعلیٰ سندھ نے آر ٹی لیمپ ٹیسٹنگ مشینوں اور 10000 آر ٹی لیمپ کٹس کی خریداری کی بھی منظوری دی اور مشینوں اور کٹس کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے ہدایات جاری کیں ۔

وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا گیا کہ صحت کی 7 سہولیات کی جانچ کی مشینیں مہیا کی گئیں ہیں جیسا کہ چیسٹ کلینک لیاری، ڈی ایچ کیو کشمور ، سول اسپتال کراچی ، تعلقہ اسپتال ہالا ، ڈی ایچ کیو سانگھڑ، ڈی ایچ کیو گھوٹکی  اور ڈی ایچ کیو نوشہروفیروز شامل ہیں ۔ یہ صحت کی سہولیات روزانہ 6 بیچز میں 1344 ٹیسٹ کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں ۔ لہٰذا ان صحت کی سہولیات کو اگلے 90 دن کے لئے 120960 کٹس کی ضرورت ہے۔