عوام کوذخیرہ اندوزوںاور منافع خوروں کے رحم پر چھوڑ دیاگیا‘آفتاب صدیقی

59

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری و رکن قومی اسمبلی آفتاب صدیقی نے کہا کہ شہر میں لاک ڈائون ہونے کے بعد گراں فروشوں اور ذخیرہ اندوزوں کے خلاف کارروائی کے لیے اقدامات نہ اٹھانے کی وجہ سے عوام بد ترین صورتحال کا شکار ہیں۔ شہر کے مختلف علاقوں میں اشیا ضروریہ کی قلت ہے۔ مصنوعی قلت ہونے کے باعث عوام منہ مانگی قیمتوں پر اشیاخریدنے پر مجبور ہیں۔ میڈیا سیل انصاف ہاوس سے جاری اپنے بیان میں ان کا مزید کہنا تھا کہ ضلعی ڈپٹی اور اسسٹنٹ کمشنرز علاقوں میں آنے سے گریزاں ہیں۔ شہر میں اس وقت آٹا 70روپے، چینی90روپے تک فروخت کی جارہی ہیں اور دیگر اشیاخورونوش کی قیمتیں بھی آسمان سے باتیں کر رہی ہیں۔ حکومت سندھ حالات اور عوام کی مجبوری سے فائدہ اٹھانے والوں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائے۔ آفتاب صدیقی نے مزید کہا کہ کمشنر کراچی صورتحال سے بخوبی واقف ہونے کے باوجود کاروائی نہیں کر رہے۔ ہم سمجھتے ہیں کہ ان مشکل حالات میں صوبائی حکومت کورونا سے بچاو کے لئے اقدامات میں مصروف ہے اور ہم انکے اقدامات کو سراہتے ہیں لیکن عوام کو بے یار و مددگار چھوڑنا سراسر زیادتی ہے۔ موجودہ حالات میں ہم سب کو مل کر اس مشکل وقت کا سامنا کرنا ہے، سرکاری افسران اس وقت میں عوام کا ساتھ دیں اور ان کے لئے آسانیاں پیدا کرنے کے لئے قدم بڑھائیں۔